The news is by your side.

Advertisement

سندھ حکومت کا وفاق سے سی این جی پرسیلز ٹیکس کے خاتمے کا مطالبہ

کراچی : سندھ حکومت نے وفاق سے سی این جی پرسیلز ٹیکس کے خاتمے کا مطالبہ کردیا ، اویس شاہ کا کہنا ہے کہ ظالمانہ فیصلہ فوری واپس لیا جائے ، سی این جی مہنگی ہونے سے کرایوں میں اضافہ ہوگا۔

تفصیلات کے مطابق سندھ حکومت کی جانب سے وزیر ٹرانسپورٹ سندھ نے وفاق سے سی این جی پرسیلز ٹیکس کے خاتمے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ، ظالمانہ فیصلہ فوری واپس لیاجائے،اس سےمہنگائی کا نیا طوفان آئے گا۔

اویس شاہ کا کہنا تھا سی این جی مہنگی ہونے سے کرایوں میں اضافہ ہوگا، سندھ سب سے زیادہ گیس پیدا کرتا ہے ، سندھ میں ٹرانسپورٹرز سب سے زیادہ سی این جی استعمال کرتے ہیں۔

وزیر ٹرانسپورٹ نے کہا ٹیکس کا بوجھ بھی سندھ کے ٹرانسپورٹرز پر ڈالا گیا ہے، ٹرانسپورٹرز نے وفاقی حکومت کےخلاف تحریک چلائی تو پی پی ساتھ دے گی۔

یاد رہے گذشتہ روز  آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی (اوگرا) کی جانب سے سی این جی مہنگی ہونے کا نوٹیفکیشن جاری کردیا گیا جس کا اطلاق یکم جولائی سے ہوگا،  نوٹیفکیشن کے مطابق سی این جی سیکٹر کے لیے گیس کی قیمت 980 روپے سے بڑھ کر 1283 روپے فی ایم ایم نے مقرر کردی گئی۔

مزید پڑھیں : سی این جی پر سیلز ٹیکس کے نئے اضافی نرخ کا نوٹیفکیشن جاری

گیس کی قیمتیں بڑھنے سے 19 روپے فی کلو گرام اضافہ ہوگا اور سیلز ٹیکس فارمولے شامل کرکے سی این جی کی قیمتوں پر مجموعی اضافہ 22 روپے فی کلو گرام کیا گیا۔

ریجن ون کے سی این جی صارفین کو گیس سپلائی پر 69 روپے 57 پیسے فی کلو ٹیکس دینا ہوگا، ریجن ٹو کے صارفین پر سی این جی سپلائی 74 روپے 4 پیسے کلو ٹیکس عائد کیا گیا ہے۔

ریجن ون میں پختونخوا، بلوچستان، راولپنڈی، اسلام آباد، گوجر خان شامل ہیں، ریجن ٹو میں سندھ اور پوٹھوہار کے علاوہ پنجاب بھر کے دیگر علاقے شامل ہیں۔

ایف بی آر ٹیکسوں میں اضافے سے سی این جی کی قیمتوں میں 21 سے 22 روپے اضافہ ہوگا، سندھ میں سی این جی کی قیمت 125 روپے فی کلو ہوجائے گی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں