The news is by your side.

Advertisement

ڈاکٹرعاصم کیس میں وکیلِ سرکارکی تبدیلی، رینجرزاورسندھ حکومت کے درمیان خلیج بڑھنے کا امکان

کراچی: سندھ حکومت نے ڈاکٹرعاصم کیس میں نثاراحمد کوخصوصی سرکاری وکیل تعینات کردیا ہے جس سے صوبائی حکومت اوررینجرزکے درمیان خلیج بڑھنے کا اندیشہ ہے۔

اس سے قبل مشتاق جہانگیری کرپشن اوردہشت گردی کی سہولت کاری کے الزامات میں ڈاکٹرعاصم کیس میں وکیلِ سرکارتھے۔

دوسری جانب ڈپٹی سپرنٹنڈنٹ رینجرزعنایت اللہ جن کی مدعیت میں ڈاکٹرعاصم کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا ہے انہوں نے سندھ ہائی کورٹ سے استدعا کی ہے کہ مشتاق جہانگیری کو ڈاکٹرکیس میں وکیل سرکاربرقراررکھا جائے۔

انہوں نے یہ بھی کہا ہے کہ ڈاکٹرعاصم حسین کے کرپشن میں ملوث ہونے اوراپنے اسپتال میں دہشت گردوں کا علاج کرنے کے ناقابلِ تردید ثبوت موجود ہیں۔

ڈپٹیسپرنٹنڈنٹ رینجرزعنایت اللہ نے یہ بھی الزام عائد کیا کہ سندھ حکومت محکمہ داخلہ پر مشتاق جہانگیری کی تبدیلی پردباوٗ ڈال رہی ہے جس کی وجہ یہ ہے کہ انہوں نے ڈاکٹرعاصم کو چھوڑنے کی رپورٹ کو منظور کرنے سے انکارکردیا تھا۔

ڈاکٹرعاصم حسین کو کرپشن اور دہشت گردوں کی سہولت کاری کے الزام میں رواں سال 26 اگست کوگرفتارکیا گیا تھا۔ رینجرزنے انہیں نوے روز تک اپنی تحویل میں رکھا اوردوران تفتیش مبینہ طورپرانہوں نے کرپشن میں ملوث سندھ حکومت کے بڑے ناموں پر سے پردہ فاش کیا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں