The news is by your side.

Advertisement

وزیر صحت سندھ نے پرائمری اسکولوں کو کھولنے کی مخالفت کردی

کراچی : وزیر صحت سندھ ڈاکٹر عذرا فضل پیچوہو نے پرائمری اسکولوں کو دوبارہ کھولنے کے فیصلے کی مخالفت کرتے ہوئے کہا صوبے میں کورونا وائرس کی شرح میں اضافہ ہورہا ہے۔

تفصیلات کے مطابق وزیرصحت سندھ ڈاکڑ عذرا فضل پیچوحو نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ صوبے میں کورونا وائرس کی شرح میں اضافہ ہو رہا ہے، موجودہ حالات میں اسکول کھولنا درست عمل نہیں۔

ڈاکٹر عذرا فضل پیچوحو کا کہنا تھا کہ وائرس کی شرح 1.5 فیصد سے 3 فیصد تک بڑھ گیا ہے، وینٹی لیٹر اور آکسیجن کے بستروں پر بھی مریض آرہے ہیں۔

وزیرصحت سندھ نے کہا کہ کورونا کی دوسری لہر کی پیش گوئی ہے، پرائمری اسکولوں کو کھولنے میں جلدی نہ کی جائے، اسکول کھولنے پر تحفظات ہیں، کم سے کم ایک سے دیڑھ ماہ کا وقت دینا ضروری ہے، صورت حال واضح ہونے پر ہی بچوں کو اسکول بھیجا درست ہوگا۔

مزیدپڑھیں :  سندھ حکومت نے 28ستمبر سے دوسرے مرحلے میں تعلیمی ادارے کھولنے کا اعلان کردیا

یاد رہے 22 ستمبر کو نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر (این سی او سی) نے دوسرے مرحلے میں اسکولز کھولنے کی اجازت دیتے ہوئے کہا تھا کہ چھٹی سے آٹھویں جماعت تک کی کلاسزکا آغاز 23 ستمبر سے ہوگا۔

خیال رہے حکومت سندھ نے 21 ستمبر سے 6 سے 8 ویں کی کلاسز شروع کرنے کا فیصلہ مؤخر کردیا تھا ، بعد ازاں سندھ حکومت نے 28ستمبر سے دوسرے مرحلے میں تعلیمی ادارے کھولنے کا اعلان کیا ہے، وزیرتعلیم سعید غنی کا کہنا تھا کہ سندھ کے اسکولز 28 ستمبر کو کلاس 6 سے 8 کھولنے کے پابند ہوں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں