The news is by your side.

Advertisement

متنازعہ بلدیاتی ایکٹ: ایم کیو ایم عدالت پہنچ گئی

کراچی: ایم کیو ایم نے سندھ لوکل گورنمنٹ ایکٹ 2021 کے تحت حلقہ بندیوں کو چیلنج کردیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق ایم کیو ایم نے سندھ لوکل گورنمنٹ ایکٹ 2021 کے تحت حلقہ بندیوں کو چیلنج کیا ہے اور سندھ ہائیکورٹ میں نئےبلدیاتی قانون کےتحت حلقہ بندیوں کیخلاف آئینی درخواست دائر کردی ہے۔

درخواست خالد مقبول صدیقی سمیت پانچ رہنماؤں کی جانب سے دائر کی گئی ہے، درخواست میں موقف اپنایا گیا ہے کہ 31 دسمبر2021 کو سندھ حکومت کی جانب سے جاری نوٹیفکیشن کو غیر آئینی قرار دیا جائے کیونکہ سندھ حکومت کی جانب سے حلقہ بندیاں لسانی بنیادوں پر کی گئی ہیں۔

یاد رہے کہ اس سے قبل سپریم کورٹ نے سندھ لوکل گورنمنٹ ایکٹ کی شق 74 اور 75 کالعدم قرار دے دی تھی، عدالت عظمی نے سندھ حکومت کو تمام قوانین، آئین کے آرٹیکل 140 اے سے ہم آہنگ بنانے کی ہدایت کی تھی۔

یہ بھی پڑھیں: گورنر سندھ کا ایک بار پھر بلدیاتی بل پر دستخط نہ کرنے کا فیصلہ

سپریم کورٹ کے فیصلے کے مطابق سندھ حکومت بااختیار بلدیاتی ادارے قائم کرنے کی پابند ہے، بلدیاتی حکومت کے تحت آنے والا کوئی نیا منصوبہ صوبائی حکومت شروع نہیں کر سکتی، ماسٹر پلان بنانا اور اس پر عملدرآمد بلدیاتی حکومتوں کے اختیارات ہیں۔ آئین کے تحت بلدیاتی حکومت کو مالی، انتظامی اور سیاسی اختیارات یقینی بنائے جائیں۔ سندھ حکومت مقامی حکومتوں کیساتھ اچھا ورکنگ ریلیشن رکھنے کی پابند ہے۔

دوسری جانب خالدمقبول کا کہنا تھا کہ اپوزیشن جماعتوں سے ملاقات سیاسی جماعت کی حیثیت سے کی، اس موقع پر صحافی نے سوال کیا کہ آپ اپوزیشن سے مل رہے ہیں کیا آپ وفاقی حکومت سے اکتا گئے ہیں ؟، جس پر خالد مقبول صدیقی نے کہا کہ وہ نہیں اکتا سکتے اکتانے کی باری ہماری ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں