The news is by your side.

Advertisement

ووٹ فروخت کرنے والا گناہ گار ہے تو خریدنے والا؟ سراج الحق کا سوال

اسلام آباد: جماعت اسلامی کے امیر اور سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ تحریک انصاف نے ووٹ فروخت کرنے والے اراکین کو پارٹی سے نکالنے کا اچھا فیصلہ کیا مگر سوال پیدا ہوتا ہے کہ اگر ووٹ فروخت کرنے والا گناہ گار ہے تو خریدنے والا کون ہے؟

اے آر وائی کے پروگرام سوال یہ ہے میں میزبان ماریہ میمن کے ہمراہ گفتگو کرتے ہوئے جماعت اسلامی کے امیر کا کہنا تھا کہ پی پی اورپی ٹی آئی نے ہمیشہ ایک دوسرے سے اختلاف کیا مگر سینیٹ انتخابات میں تحریک انصاف نے پیپلزپارٹی کو ووٹ دیا جس کے بعد سینیٹ ہال میں زرداری کے حق میں نعرے لگے۔

اُن کا کہنا تھاکہ سینیٹ الیکشن میں ووٹ فروخت کرنے والا گناہ گار ہے تو پھر خریدنے والا کیا ہے؟ دیکھنا ہوگاجنہوں نےووٹ خریدا ان کی آئینی واخلاقی حیثیت کیاہے کیونکہ پی پی کے پاس اتنے امیدوار نہیں تھے اس لیے سوال پیدا ہوتا ہے کہ سلیم مانڈوی والا ڈپٹی چیئرمین کی نشست پر کیسے فتح یاب ہوئے۔

سراج الحق کا کہناتھا کہ تحریک انصاف نے ووٹ فروخت کرنے والے اراکین کو نوٹس دے کر اچھا کام کیا، عمران خان نے ایسے 20 اراکین کو پارٹی سے نکالا اُن کے اس اقدام کی مکمل حمایت کرتا ہوں، فواد چوہدری نے جو بھی باتیں کیں اُن پر ردعمل دینا اپنے منصب کے منافی سمجھتا ہوں۔

امیر جماعتِ اسلامی کا کہنا تھاکہ اصولوں کی بنیاد پر تحریک انصاف کے ساتھ خیبرپختونخواہ حکومت میں شامل ہوئے تھے یہ ملکی سطح کا اتحاد نہیں بلکہ مخلوط حکومت کے ساتھ شرکت ہے۔ سینیٹر سراج الحق کا مزید کہنا تھا کہ ’میٹرو منصوبے تاخیر سے شروع ہوا جس کی وجہ سے پشاورکھنڈرمیں تبدیل ہوگیاجبکہ یہی شہر اُس سے پہلے بہت خوبصورت ہوگیا تھا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں