The news is by your side.

Advertisement

پشاوراورمالاکنڈ میں تفریق کیے بغیرملک کے ہرحصے میں ایک سا قانون ہونا چاہیے، سراج الحق

لاہور : امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے کہا ہے کہ پشاور اور مالا کنڈ میں الگ الگ قوانین مناسب عمل نہیں ہے اس لیے جماعت اسلامی پورے پاکستان کے لیے ایک سا قانون اور آئین کی خواہاں ہیں.

وہ اسلام آباد میں فاٹا کا خیبر پختونخواہ انضمام کے لیے ہونے والے مظاہرے پر ردعمل دے رہے تھے انہوں نے کہا کہ وفاقی حکومت اور سرتاج عزیز نے قوم سے وعدہ کیا تھا کہ فاٹا سے متعلق کوئی بھی فیصلہ فاٹا عوام کی مرضی کے خلاف نہیں کیا جائے گا.

امیر جماعت اسلامی نے کہا کہ ہم نے 7 ہزار لوگوں سے ملاقاتیں کیں اور تمام افراد ایف سی آر سے نجات حاصل کرنا چاہتے ہیں اس لیے جماعت اسلامی کو عوام کی رائے کا احترام کرتے ہوئے فاٹا کے خیبر پختونخواہ میں انضمام کےعلاوہ کوئی آپشن قبول نہیں ہے.

سراج الحق نے مطالبہ کیا کہ قبائلیوں کو 2018 میں کے پی کے اسمبلی میں حصہ دیاجائے اور جب تک قبائلیوں کو ان کا حق نہیں ملتا ہمارا احتجاج جاری رہے گا.

انہوں نے کہا کہ قانون اور انصاف سب کے لیے ایک ہونا چاہیئے اور وسائل کی منصفانہ تقسیم ہم سب کے مفاد میں ہے جس سے صرف نظر کرنا اب ممکن نہیں رہا ہے.


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں