The news is by your side.

Advertisement

فاٹا تک عدالتی دائرہ کار کا سینیٹ سے پاس کردہ بل بارش کا پہلا قطرہ ہے: سراج الحق

لاہور: جماعت اسلامی کے امیر سراج الحق نے کہا ہے کہ فاٹا تک عدالتی دائرہ کار کا سینیٹ سے پاس کردہ بل بارش کا پہلا قطرہ ہے، بل کی منظوری سے قبائلی عوام کے حقوق کی بحالی کا راستہ کھل گیا۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کیا، سراج الحق کا کہنا تھا کہ اس قسم کے اقدامات سے قبائلی عوام کو فائدہ پہنچے گا، ان کی محرمیوں کو ختم کرنے کی ضرورت ہے، میں مطالبہ کرتا ہوں کہ فاٹا کے قبائل کو این ایف سی ایوارڈز سے تین فیصد حصہ دیا جائے۔

مسلم لیگ (ن) اور پاکستان کی سیاسی صورت حال پر تبصرہ کرتے ہوئے امیر جماعت اسلامی کا کہنا تھا کہ ملک سے کرپشن کا خاتمہ وقت کی ضرورت ہے، صرف نواز شریف کی نااہلی سے کرپشن کا ناسور ختم نہیں ہوگا، پانامہ لیکس کے 436 کرداروں کا بھی احتساب ہونا چاہیے۔

سینیٹ نے اعلیٰ عدلیہ کا دائرہ کار فاٹا تک بڑھانے کا بل پاس کر لیا: ڈپٹی چیئرمین سینیٹ

سراج الحق کا مزید کہنا تھا کہ ملک میں الیکشن کا سال ہے، لیکن عام انتخابات سے متعلق شکوک وشبہات کا اظہار کیا جارہا ہے، بروقت الیکشن وقت کا تقاضہ ہے اور ملکی استحکام کے لیے ضروری ہیں۔

خیال رہے کہ گذشتہ دنوں سینیٹ نے سپریم کورٹ اور ہائی کورٹ کا دائرہ اختیار وفاق کے زیر انتظام قبائلی علاقہ جات تک بڑھانے کے بل کی اتفاق رائے سے منظوری دے دی ہے اور چیئرمین سینیٹ کی جانب سے بل پر دست خط بھی کیا جاچکا ہے۔

فاٹا میں امن بحال ہوا تو کچھ لوگوں نے نئی تحریک شروع کردی، آرمی چیف

بعد ازاں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ڈپٹی چیئرمین سینیٹ سلیم مانڈوی والا کا بل سے متعلق کہنا تھا کہ اعلیٰ عدلیہ کا دائرہ کار فاٹا تک بڑھانے کا اہم بل پاس کر لیا گیا ہے، فاٹا کے عوام کئی دہائیوں سے اپنے حقوق کی جنگ لڑ رہے تھے اور سینیٹ سے اس بل کا پاس ہونا ان کا حق تھا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں