The news is by your side.

Advertisement

پنامہ کیس سیاسی مسئلہ نہیں ملک کے مستقبل کا سوال ہے: سراج الحق

اسلام آباد: جماعت اسلامی کے سربراہ سراج الحق کا کہنا ہے کہ تاخیری حربے حکومت کے کام نہیں آئیں گے‘ پیسہ کس طرح ملک سے باہر گیا بتانا ہوگا، یہ سیاسی مسئلہ نہیں ملک کے مستقبل کا سوال ہے۔

وفاقی دارالحکومت میں سپریم کورٹ کےباہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سراج الحق کا کہنا تھا کہ ’اگرآف شورکمپنیاں جائز ہیں تو ان پرلگنےوالا پیسہ پاکستان سے کیسے گیا ہے،ہنڈی کےذریعے گیا ہے یا قانونی طریقے سے گیا ہے‘‘۔

ان کا کہنا تھا کہ ’’یہ سیاسی مسئلہ نہیں ملک کا مستقبل سنوارنےکا مقدمہ ہے، میں شروع سے ہی اس موقف کا حامی تھا مجھے خوشی ہے کہ میرے دوستوں نے بھی اس میں میراساتھ دیا‘‘۔


پانامہ کیس‘ وزیراعظم کے بچوں کو پیر تک جواب جمع کرانے کی ہدایت


جماعت اسلامی کے سربراہ نے تحقیقاتی اداروں کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے سوال کیا کہ نیب نے کیوں کارروائی نہیں کی اور ایف آئی اے کیوں خاموش ہیں۔

سراج الحق نے یہ بھجی کہا کہ حکومت سے کہنا چاہتاہوں کہ تاخیری حربےکام نہیں آئیں گےحقائق کا سامنا کرنا ہوگا، یہ ایک پارٹی کا کیس نہیں ہے یہ 20کروڑ عوام کےجیبوں پرسرجیکل اسٹرائیک کا مقدمہ ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ کرپشن کی وجہ سے عوام کے ہاتھوں میں ہتھکڑیاں ہیں،سنجیدہ مسئلے کوشورشرابے اورغل غپاڑے کی نذرنہیں کرناچاہئے۔

واضح رہے کہ سپریم کورٹ کے لارجر بنچ نے آج پنامہ کیس کی سماعت کی جس میں وزیراعظم کی جانب سے جواب داخل کرایا گیا جبکہ وزیر اعظم کے بچوں کی جانب سے جواب داخل نہیں کرایا جاسکا۔

واضح رہے کہ پاکستان تحریک انصاف،جماعت اسلامی، عوامی مسلم لیگ، جمہوری وطن پارٹی اور طارق اسد ایڈووکیٹ نے پاناما لیکس کی تحقیقات کے لیے سپریم کورٹ میں آئینی درخواستیں دائر کی تھیں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں