The news is by your side.

Advertisement

ترکی: ناکام فوجی بغاوت میں ملوث ہونے پر 6 صحافیوں کو دس سال قید کی سزا

انقرہ: ناکام ترک فوجی بغاوت میں ملوث ہونے کے الزامات ثابت ہوگئے، عدالت نے چھ صحافیوں کو دس سال قید کی سزا سنا دی۔

تفصیلات کے مطابق ترکی میں 2016 میں ایک فوجی بغاوت ہوئی تھی جو ترک صدر رجب طیب اردگان کی اپیل پر عوام نے ناکام بنا دی تھی، اسی بغاوت میں ملوث ہونے کے الزامات چھ صحافیوں پر ثابت ہوچکے ہیں۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق ترک شہر استنبول کی ایک عدالت نے مذکورہ چھ صحافیوں کو تقریبا دس سال تک کی سزائے قید سنائی ہے، جبکہ ان پر بھاری جرمانے بھی عائد کیے جاسکتے ہیں۔


ترکی: ناکام فوجی بغاوت میں ملوث 104 فوجی افسران کو عمر قید کی سزا


دوسری جانب ترک حکام کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ ان ملزمان پر دہشت گردی سے متعلق الزامات تھے جس پر ان کی گرفتاری عمل میں لائی گئی اور تحقیقات کا آغاز کیا گیا تھا۔

اس کیس میں گیارہ افراد کے خلاف مقدمے چلائے گئے تھے، جو جولائی سن دو ہزار سولہ کی ناکام فوجی بغاوت کے بعد گرفتار کیے گئے تھے، تاہم اب چھ صحافیوں پر الزامات ثابت ہوئے ہیں۔


ترکی: ناکام فوجی بغاوت، 211 فوجیوں سمیت 300 افراد کی گرفتاری کا حکم


خیال رہے کہ یہ ملزمان زمان نامی ایک اخبار کے لیے کام کرتے تھے اور باقاعدہ کالم بھی لکھا کرتے تھے جبکہ انسانی حقوق کے اداروں نے ان مقدمات کی شفافیت پر سوالات اٹھائے ہیں۔

واضح رہے کہ 18 جولائی 2016 کو ترکی میں فوج کے باغی گروہ نے اقتدار پر قابض ہونے کی کوشش کی تھی جسے عوام نے ناکام بنادیا تھا، اس دوران عوام سڑکوں پر نکل کر آئے اور فوجی ٹینکوں کے سامنے ڈٹ گئے تھے جس کے بعد ترک فوج کے باغی ٹولے نے ہتھیار ڈال کر اپنی شکست تسلیم کی تھی اور پھر انہیں گرفتار کرلیا گیا تھا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں