The news is by your side.

Advertisement

ٹھٹھہ: کوئلے کی کان سے 40 گھنٹے بعد 6 کان کنوں کی لاشیں نکال لی گئیں

ٹھٹھہ: جھمپیر میں مٹنگ ریلوے اسٹیشن پر 40 گھنٹے کے بعد کوئلے کی کان میں پھنسے  6 کان کنوں کی لاشیں نکال لی گئیں۔

تفصیلات کے مطابق جھمپیر میں مٹنگ ریلوے اسٹیشن پر کوئلے کی کان کے اندر پھنس کر جان حق ہونے والے چھ مزدوروں کی لاشیں چالیس گھنٹے بعد نکال لی گئیں۔

ریسکیوٹیم انچارج زردارخان نے بتایا کہ لاشیں نکالنے کا کام مختلف علاقوں سےآنیوالے کانکنوں کی ریسکیوٹیم نے کیا، 6لاشیں ایک ہی گڑھےمیں موجود تھیں تاہم دیگر کان کنوں کی تلاش کیلیے ریسکیو آپریشن جاری ہے۔

ڈی سی ٹھٹھہ غظنفر علی قادری نے بتایا کہ باقی کی تلاش کے لئے ریسکیو آپریشن جاری ہے ڈی سی ٹھٹھہ غظنفر علی قادری

یاد رہے دو روز قبل پہاڑوں سے آنے والی برساتی ریلے کا پانی جھمپیر میں مٹنگ ریلوے اسٹیشن کے پاس کوئلے کی کان میں داخل ہوگیا تھا۔

کان میں بارش کا پانی داخل ہونے کی وجہ سے کان کن پھنس گئے تھے، جن کو نکالنے کے لئے ڈپٹی کمشنر ٹھٹھہ غظنفر علی قادری کی نگرانی میں امدادی کارروائی شروع کی گئی۔

پانی نکالنے کے لئے بھاری مشینری اور غوطہ خور طلب کئے گئے اور پانی نکالنے والی مشینری کے ذریعے پانی کان سے نکالنا شروع کیا گیا۔

شدید برسات کی وجہ سے امدادی کاروائیاں کئی دفعہ معطل کی گئی، جس پر مقامی مزدوروں نے ریلوے ٹریک پر کھڑے ہوکر احتجاج کرکے پنجاب اور کراچی کے درمیان ریلوے ٹریفک معطل کردی تاہم احتجاج کے بعد امدادی کاروائی تیزکر دی گئی تھی۔

چالیس گھنٹے کی کوششوں کے بعد کان کنوں کی لا شیں نکالی گئیں، جاں بحق مزدوروں کا تعلق کے پی کے کے سوات کے علاقے سے ہے۔

جانبحق ہونے والوں میں سجاد علی، میاں شیر، محمد خان، پرویز ، عطااللہ، محمد عظیم، محمد ابوبکر، اور گل خان شامل ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں