The news is by your side.

لودھراں میں کچی آبادی مسمار، متاثرین پربہیمانہ تشدد

لودھراں: ضلعی انتظامیہ نے سالوں قدیم کچی آبادی کو راتوں رات مسمارکردیا، سینکڑوں افراد بے گھرہوگئے، مال و اسباب ملبے تلے دب گیا۔

تفصیلات کے مطابق لودھراں میں 350 کنال پرمشتمل کچی آبادی کے 150 گھروں کو ضلعی انتظامیہ نے گرینڈ آپریشن کرکے مسمارکردیا، متاثرین کا دعویٰ ہے کہ انہیں سامان نکالنے تک کی بھی مہلت نہیں دی گئی۔

آپریشن کے دوران مکانات نہ خالی کرنے والے مکینوں پرانتظامییہ کی جانب سے بہیمانہ تشدد کیا گیا جس کےنتیجے میں متعدد خواتین بے ہوش ہوگئیں۔

مظاہرین کا کہنا ہے کہ انتظامیہ نے حد درجہ بے حسی کا مظاہرہ کیا ہے جس کے سبب ان کے سروں سے چھت تو گئی ہی ساتھ ہی ان کا مال واسباب سب تباہ و برباد ہوگیا ان کے استعمال کے برتن اوران کے بچوں کی کتابیں ملبے تلے دب گئیں ہیں۔

متاثرین کا کہنا ہے سابق صدرپرویزمشرف اوروزیراعلیٰ پنجاب پرویزالہی کے دورمیں انہیں مالکانہ حقوق دیئے گئے تھے، انتظامیہ نے بغیرنوٹس کارروائی کی ہے۔ متاثرین کا کہنا تھا کہ ’’اگرہم قانونی مالک نہیں ہیں تو پٹواری کس طرح ہمیں مالکانہ حقوق دے رہے ہیں اورواپڈا نے کیسے یہاں میٹرنصب کردیئے‘‘۔

دوسری جانب ڈیڑھ سو سے زائد مکانات مسمارکرکےزمین واگزارکرانے والی انتظامیہ کا موقف ہے کہ سرکاری رقبہ جعلسازی کے ذریعے فروخت کیا گیا۔ پانچ رکنی جعلساز گروہ کے خلاف کاروائی کے لئے تھا نےمیں درخواست دےدی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں