The news is by your side.

Advertisement

اسمارٹ لاک ڈاؤن : لاہور کے مزید سات علاقے بند کردیئے گئے

لاہور : محکمہ داخلہ پنجاب نے کرونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لئے لاہور کے مزید 7 علاقے سیل کرنے کا حکم جاری کردیا، صحافی، ڈاکٹرز، پیرا میڈیکل اسٹاف کو آنے جانے کی اجازت ہوگی۔

تفصیلات کے مطابق کورونا وائرس کے پھیلاؤ کے سدباب اور ایس او پیز پر یقینی عمل درآمد کیلئے محکمہ داخلہ پنجاب نے لاہور کے مزید7علاقے سیل کردئے اس حوالے سے نوٹیفکیشن بھی جاری کردیا گیا ہے۔

نوٹیفکیشن کے مطابق لاہور کے سیل کیے گئےعلاقوں میں گلبرگ، ماڈل ٹاؤن، گارڈن، فیصل ٹاؤن، ڈی ایچ اے، گلشن راوی اور اندرون شہر بھی سیل کیے گئے علاقوں میں شامل ہیں۔

نوٹیفکیشن میں مزید کہا گیا ہے کہ صحافی، ڈاکٹرز اور پیرا میڈیکل اسٹاف کو آنے جانے کی اجازت ہوگی، اس کے علاوہ سرکاری ملازمین، وکلا، فارمیسی اور گروسری اسٹاف بھی پابندی سے مستثنیٰ ہوں گے۔

علاوہ ازیں پنجاب کی وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد نے کہا ہے کہ سیل کیے گئے علاقوں میں بنیادی اشیا کی دکانیں کھلی رہیں گی ،سات مزید علاقوں کو لاک ڈاؤن کرنے کا اہم مقصد ہی کورونا سے بچاؤ ہے، ہم پوری کوشش کررہے ہیں کہ معیشت کا پہیہ چلتا رہے،اسمارٹ لاک ڈاؤن کا مقصد کورونا کے پھیلاوَ کو روکنا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ایس او پیز پر عمل درآمد ہماری اجتماعی ذمہ داری ہے،جن علاقوں میں کورونا کیسز بڑے وہ مکمل سیل کررہے ہیں،پنجاب میں 30 سے 35 فیصد بیڈز دستیاب ہیں، کورونا مریضوں کی ریکوری 20 ہزارکے قریب ہوگئی، پبلک سیکٹر میں 250ہائی ڈیپنڈیسی یونٹس اور 60وینٹی لیٹرز موجود ہیں،تیس سے پچاس فیصد بیڈز اسپتالوں میں خالی پڑے ہیں۔

ڈاکٹر یاسمین راشد کا کہنا تھا کہ کورونا ختم نہیں ہوگا لیکن ایس او پیز پر عمل درآمد سے کم ضرور ہوگی،امید ہے جن علاقوں کو بند کیاجائے گا وہاں بھی کیسز کم آئیں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں