The news is by your side.

Advertisement

اسمگل شدہ پٹرولیم مصنوعات کے خلاف کریک ڈاؤن کا آغاز

کراچی : اسمگل شدہ پیٹرولیم مصنوعات کی روک تھام کیلئے حکومت نے پیٹرول پمپس مالکان کیخلاف سخت کارروائی کی تیاری کرلی، ایف بی آر کو کریک ڈاؤن کا حکم جاری کردیا۔

پیٹرولیم مصنوعات کی اسمگلنگ کے حوالے سے وزیر اعظم کی ہدایت پر کریک ڈاؤن کیلئے نوٹیفکیشن جاری ہونے کے بعد ایف بی آر کے تحت اسمگل شدہ پٹرولیم مصنوعات کے خلاف کریک ڈاؤن کا آغاز کردیا گیا۔

سالانہ2ارب ڈالرز کی اسمگل شدہ پٹرولیم مصنوعات فروخت کی جاتی ہیں، اسمگلنگ سے قومی خزانے کو سالانہ200ارب روپے کا نقصان پہنچ رہا ہے۔

نوٹیفکیشن کے مطابق اسمگل شدہ پیٹرولیم مصنوعات فروخت کرنے والے پمپس کےخلاف آپریشن کیا جائے گا، آپریشن میں رینجرز، کسٹمز، ایف سی اور ضلعی انتظامیہ حصہ لیں گی۔

حکم نامہ میں کہا گیا ہے کہ پمپ انتظامیہ تمام متعلقہ قانونی دستاویزات پیش کرنے کی پابند ہوں گی، قانونی دستاویزات پیش نہ کرنے پرپمپس مالکان کیخلاف قانونی کارروائی کے علاوہ پیٹرول پمپس کو سیل بھی کیا جائے گا۔

اس کے علاوہ اسمگل شدہ پیٹرولیم مصنوعات کی معلومات دینے والے کا ڈیٹا صیغہ راز میں رکھا جائے گا، اسمگل پٹرولیم مصنوعات فروخت کرنے پر کسٹمز ایکٹ کے تحت مقدمہ درج ہوگا۔

غیرقانونی کام میں ملوث پیٹرول پمپ مالکان کو5سے10سال قید کی سزاہوگی، اسمگل شدہ مصنوعات پٹرول پمپ، ٹینکر اور اسمگلرز کی جائیداد بھی ضبط کی جاسکتی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں