سوشل میڈیا پرگستاخانہ مواد‘ قومی اسمبلی میں مذمتی قرارداد منظور -
The news is by your side.

Advertisement

سوشل میڈیا پرگستاخانہ مواد‘ قومی اسمبلی میں مذمتی قرارداد منظور

اسلام آباد: سوشل میڈیاپرگستاخانہ موادکے خلاف قومی اسمبلی میں مذمتی قراردادیں منظورکرلی گئیں‘ توہین رسالت کے تدارک کیلئے پارلیمانی کمیٹی بنانےکی تحریک کی منظوری بھی دےدی گئی۔

تفصیلات کے مطابق قومی اسمبلی میں آج منگل کے روز سوشل میڈیاپر گستاخانہ موادبلاک کرنے اور ملزمان کے خلاف سخت کارروائی کرنے کے لیے قرارداد منظور کی گئی۔

قومی اسمبلی میں یہ قراردادیں کیپٹن صفدراور نعیمہ کشور نے پیش کیں جن میں کہا گیا کہ ایوان سوشل میڈیا پرگستاخانہ موادکی مذمت کرتا ہے، حکومت فوری طور پر اس کے خلاف اقدامات کرے۔

ڈپٹی سپیکر کی تجویز پر قومی اسمبلی نے توہین رسالت کے تدارک کے لئے پارلیمانی جماعتوں کی کمیٹی کے قیام کی تحریک بھی منظور کرلی۔ دس رکنی پارلیمانی کمیٹی اس حوالے سےسفارشات پیش کرے گی۔

پنجاب اسمبلی میں مذمتی قرارداد

دوسری جانب آج پنجاب اسمبلی میں بھی سوشل میڈیا پر گستاخاکانہ مواد کے حوالے سے ایک قرارداد منظور کی گئی جبکہ وزیرقانون راناثنااللہ نے گستاخانہ مواد کی تحقیقات کے لیے دس ارکان پر مشتمل کمیٹی بنانےکی تجویز دی۔

پنجاب اسمبلی کی کارروائی میں اپوزیشن لیڈرمیاں محمودالرشید کا کہنا تھا کہ پیمرا اور وزارت مذہبی امور اس معاملے پر پہلےہی متحرک ہوتے تو بات اس نہج پر نہ آتی۔

مولاناالیاس چنیوٹی نےسوشل میڈیاپرتوہین آمیز موادکوقادیانیوں کافتنہ قراردیا جبکہ ڈاکٹر وسیم اختر نےکہاکہ اسلام کے نام پرقائم ملک میں کسی قسم کی توہین آمیزی برداشت نہیں کی جائے گی۔

ہمیں لوگوں کو اصل دین سے آگاہ کرنا ہے: وزیراعظم

یاد رہے کہ وزیراعظم نے چار دن قبل ایک بیان میں کہا تھا کہ دہشت گردوں نے جہاد جیسے پاکیزہ تصور کو مسخ کیا۔ ہمیں لوگوں کو اصل دین سے آگاہ کرنا ہے۔ دہشت گردی کے خاتمے کے لیے بیانیہ محراب اور منبر سے آنا چاہیئے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں