قومی اسمبلی : سوموٹومقدمات کے فیصلے کو چیلنج کرنے کیلئے بل پیش - ARYNews.tv
The news is by your side.

Advertisement

قومی اسمبلی : سوموٹومقدمات کے فیصلے کو چیلنج کرنے کیلئے بل پیش

اسلام آباد : سپریم کورٹ کے ازخود نوٹس لینے کے فیصلے کو چیلنج کرنے کیلئے حکومت نے آئین میں ترمیم کا بل ایوان میں پیش کردیا۔

تفصیلات کے مطابق قومی اسمبلی کا اجلاس اسپیکر ایاز صادق کی صدارت میں ہوا جس میں پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما جہانگیر بدر، نوید قمر کے والد عوامی نیشنل پارٹی کے رہنما حاجی عدیل کی وفات سمیت گڈانی واقعہ میں جاں بحق افراد اور پاک فوج کے شہدا کے لیے فاتحہ خوانی کی گئی۔

اجلاس میں سوموٹو کیسز میں فیصلے کے خلاف اپیل کا حق دینے کیلئے حکومت آئینی ترمیم ایوان میں لے آئی ، مذکورہ بل میں عدالت عظمیٰ کےازخود نوٹس پر فیصلہ کے خلاف اپیل کےحق کی تجویز دی گئی ہے۔

چوبیسویں آئینی ترمیم کا بل وزیرمملکت پارلیمانی امور شیخ آفتاب نے پیش کیا۔ بل میں ازخود نوٹس کے فیصلے کو لارجر بینچ میں چیلنج کرنےکی تجویز دی گئی ہے۔

ذرائع کے مطابق چوبیسویں آئینی ترمیم کے ذریعے آئین کے آرٹیکل ایک سو چوراسی کی شق تین میں ترمیم کی جائے گی اور سوموٹو نوٹس کے کیسز کے فیصلے کےخلاف اپیل کا حق حاصل ہوگا اورفیصلے کیخلاف اپیل اپیل لارجر بینچ میں کی جاسکے گی۔

علاوہ ازیں اجلاس میں وفاقی وزیر برجیس طاہر نے کنٹرول لائن پر بھارتی جارحیت اور بھمبر میں بھارتی فائرنگ کے خلاف خلاف قرارداد پیش کی جس کو اسمبلی نے متفقہ طور پرمنظور کرلیا۔ قرارداد میں بھمبر میں بھارتی فائرنگ سے شہید ہونے والے 7 جوانوں کو خراج عقیدت پیش کیا گیا اور کنٹرول لائن پر بھارتی جارحیت کی بھی شدید مذمت کی گئی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں