The news is by your side.

Advertisement

معروف بھارتی اداکارہ کار حادثے میں ہلاک

ممبئی: بھارتی اداکارہ سونیکا چوہان کار حادثے میں ہلاک ہوگئیں، شوبز شخصیات کا سونیکا کی حادثاتی موت پر گہرے رنج و غم کا اظہار کیا ہے۔۔

تفصیلات کے مطابق کولکتہ سے تعلق رکھنے والی بھارتی ماڈل و اداکارہ سونیکا چوہان کار حادثے میں اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھی ہیں،  حادثے کے وقت سونیکا کے ہمراہ معروف اداکار وکرم چٹرجی موجود تھے جو گاڑی چلا رہے تھے، وکرم چٹرجی حادثے میں شدید زخمی ہوگئے ہیں۔


اداکار وکرم چٹرجی کے مطابق سونیکا سر، کان اور ناک  پر گہری چوٹیں آئیں، سونیکا کو شدید چوٹیں آنے کی وجہ سے جائے حادثہ سے اسپتال لے کر جایا جارہا تھا تاہم وہ جانبر نہ ہوسکیں اور دار فانی سے کوچ کرگئیں۔

پولیس کے مطابق اداکار وکرم کی کار قابو سے پاہر جاتے ہوئے فٹ پاتھ سے ٹکرا گئی تھی جس کی وجہ سے حادثہ پیش آیا، گاڑی کی اسپیڈ اتنی زیادہ تھی کہ فٹ پاتھ سے ٹکرانے کے باوجود ایک دکان کے اندر جاگھسی اور 180 ڈگری کے قریبا مڑ کر رک گئیں۔

سونیکا چوہان کولکتہ ماڈل انڈسٹری کی پہچان مانی جاتی تھیں، معروف اداکارہ نے ماڈلنگ کے علاوہ بھارتی چینلز پر پیش کئے جانے والے متعدد شوز میں بھی میزبانی کے فرائض انجام دئیے، جن میں بگ باس، پرو کبڈی لیگ، دی ٹیلیگراف فوڈ گائیڈ ایوارڈز وغیرہ نمایاں ہیں۔

مس انڈیا آرگنائزیشن نے سونیکا چوہان کی حادثاتی موت پر گہرے رنج و ٖغم کا اظہار کیا ہے۔

بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق دونوں اداکار کسی تقریب سے واپس آرہے تھے جب حادثہ پیش آیا، چٹرجی اور چوہان دونوں نے ڈرائیور کرتے ہوئے سیٹ بیلٹس نہیں پہنے ہوئے تھے، تاہم پولیس تفتیش کررہی ہے کہ آیا وکرم چٹرجی کار ڈرائیو کرتے وقت نشے میں تو نہیں تھے۔

کہانی میں ٹوئسٹ


حادثے کے بعد دو طرح کی افواہیں گردش کررہی ہیں، وکرم چٹرجی کے والد بجوئے چٹرجی کے مطابق حادثہ راش بہاری ایونیو تارا روڈ پر پیش آیا جبکہ کار کسی فٹ پاتھ سے نہیں ٹکرائی بلکہ مخالف سمت سے آنے والی دوسری کار کے ساتھ حادثہ پیش آیا ہے۔

کولکتہ کے لوکل ٹریفک پولیس کا کہنا ہے کہ کار کسی مخالف سمت سے آنے والی گاڑی سے نہیں ٹکرائی بلکہ حادثہ اوور اسپیڈنگ کی وجہ سے پیش آیا ہے۔

جیولری کی دکان کے قریب رہنے والے اپارٹمنٹس میں موجود لوگوں نے تصدیق کی ہے  کہ حادثہ اس وقت پیش آیا جب وکرم کی گاڑی دمخالف سمت سے آنے والی گاڑی سے ٹکرائی۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں