The news is by your side.

Advertisement

پنجاب میں میڈیا ہاؤسزکی حفاظت کے لئے ضابطہٗ اخلاق جاری

لاہور: پنجاب پولیس نے میڈیا ہاؤسز، پلوں اور جیلوں کی سیکیورٹی بہتربنانے کے لیے تمام فیلڈ افسران کے لئے ضابطہ اخلاق جاری کردیا، میڈیا ہاؤسز چار دیواری کی اونچائی کم از کم 8فٹ اور اس پر2فٹ کی خاردارتارلازمی طور پرلگانے کے پابند کردئیے گئے۔

آئی جی پنجاب کی سربراہی میں ویڈیو لنک آر پی او کانفرنس میں جیلوں،میڈیاہاؤسز اور پلوں کی سیکیورٹی کا جائزہ لیا گیا اور اہم فیصلے کیے گئے، کانفرنس میں صوبے بھر میں سنگین جرائم میں ملوث خطرناک اشتہاریوں کی گرفتاری کے عمل کو تیز کرنے کا فیصلہ بھی کیا گیا۔

صوبے بھر میں موجود جیلوں اور پلوں کی سیکیورٹی مزید بہتر بنانے کے لئے حکمت عملی طے کر لی گئی، میڈیا ہاؤسز پرحالیہ حملوں کے پیش نظر آئندہ روک تھام کے لیے تمام فیلڈ افسران کو ضابطہ اخلاق جاری کیا گیا۔

، ضابطہ اخلاق کے مطابق تمام میڈیا ہاؤسز چار دیواری کی اونچائی کم ازکم 8 فٹ اوراس پر2فٹ کی خار دار تار لازمی طور پر لگانے کے پابند ہوں گے، وینٹیج پوائنٹس، چھتوں پر مورچے لگانے کے ساتھ ساتھ داخلی اور خارجی راستوں پر کنکریٹ کے بیرئئر لازمی قرار، تمام میڈیا ہاؤسز سیکیورٹی آلات، سی سی ٹی وی کیمرے نصب کرنے کے پابند ہونگے، داخلی راستوں پر واک تھرو گیٹس کے ذریعے داخل ہونے والوں کو باقاعدہ سرچ کیا جائے گا۔

میڈیا ہاؤسز میں سکولوں کی طرز پر ایک ایمرجنسی الرٹ سسٹم لگایا جائے گا، ایمرجنسی الرٹ سسٹم ریسکیو، ون فائیو، سی پی او، ڈی پی او، ایس ڈی پی او اور ایس ایچ او کے ساتھ منسلک ہوگا، تمام میڈیا ہاؤسزسیکیورٹی اہلکاروں کی تعیناتی سے پہلے پنجاب پولیس کی سپیشل برانچ سے تصدیق کروانے کے پابند ہونگے، ہرایس ایچ او روزانہ کی بنیادوں پر،ڈی ایس پی ہفتے میں دو مرتبہ جبکہ ڈی پی اوز ہفتے میں ایک مرتبہ اپنے اپنے علاقوں میں موجود میڈیا ہاؤسز کا خود دورہ کریں گے۔

پولیس میں کسی بھی اہلکارکی تعیناتی اور ترقی کی صورت میں اس کی آمد اورتنخواہ کے معاملات سربمہر ڈاک کے ذریعے موصول ہونے پرہی ہو سکے گی، کانفرنس میں بجٹ 2015 میں 76تھانوں کی نئی عمارتوں کی تعمیر کے عمل کے جائزے کے ساتھ ساتھ دریائی اور پی ایچ پی کی دیگر چیک پوسٹوں پر لگائے جانے والے آلات کا بھی تفصیلی جائزہ لیا گیا، اجلاس میں بتایا گیا کہ چیک پوسٹوں پر 80فیصد کام مکمل ہو چکا ہے اور باقی اگلے ہفتے تک مکمل کر لیا جائے گا۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں