The news is by your side.

Advertisement

جنوبی سوڈان کے آرمی چیف انتقال کرگئے

جوبا: جنوبی سوڈان کے آرمی چیف جنرل جیمز اجونگو مختصر علالت کے بعد آج 64 سال کی عمر میں انتقال کرگئے، وہ قاہرہ کے دورے پر تھے۔

تفصیلات کے مطابق جنرل جیمز اجونگو نے سوڈان کی پیپلز لبریشن آرمی میں 1983 میں اس وقت شمولیت اختیار کی تھی جب ایک باغی گروہ بدستور سوڈان سے آزادی کے لیے لڑ رہا تھا۔

ایک غیر ملکی خبررساں ادارے کے مطابق سوڈان کی حکومت کا کہنا ہے کہ آرمی چیف کا انتقال ایسے حالات میں ہوا ہے جب وہ صدر سلوا کیر کی انتظامیہ کو چار سالہ خانہ جنگی کے دوران بہتر انداز میں آگے لے جانے کے سلسلے میں مدد کر رہے تھے، ان کی موت سے معاملات اور پیچیدہ ہوگئے ہیں۔

آنجہانی آرمی چیف ایک سال قبل جنرل پال مالونگ کی برطرفی کے بعد ڈیفنس فورس کے چیف مقرر کیے گئے تھے۔ برطرف آرمی چیف نے اپنی تنظیم بناکر حکومت کے لیے مزید مشکلات کھڑی کردی تھیں، ان حالات میں جنرل جیمز خانہ جنگی کے خاتمے کے لیے علاقائی ممالک سے تعاون کے حصول کے لیے دوروں کی تیاری کر رہے تھے۔

سوڈانی فوج کی کارروائی، باغیوں کے قبضے سے پاکستانی بازیاب

جنوبی سوڈان کے محقق ایلن باسویل کا کہنا ہے کہ اجونگو کی موت صدر کیر کے لیے نہایت غلط موقع پر واقع ہوئی ہے۔ اب وہ ایک ایسی فوج میں اپنے مفادات کا تحفظ کریں گے جو غیر مؤثر کردی گئی ہے۔ دوسری طرف ان پر ٹرمپ انتظامیہ کی طرف سے بیرونی دباؤ بھی بڑھتا جارہا ہے۔

واضح رہے کہ سوڈان کی موجودہ حکومت اندر سے ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہے اور سابق آرمی چیف فوج کے اندر موجود اپنے دوستوں کے تعاون سے ملک میں ایک نئی بغاوت کا آغاز کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں