The news is by your side.

Advertisement

نو ٹرمپ نو، گو ٹرمپ گو کے نعروں سے امریکی صدر کا جنوبی کوریا میں استقبال

سیول: امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا جنوبی کوریا پہنچنے پر ملکی عوام نے سڑکوں پر مظاہرہ کرتے ہوئے ’’نو ٹرمپ نو، گو ٹرمپ گو‘‘ کے نعروں سے ان کا استقبال کیا۔

تفصیلات کے مطابق مظاہرین کی فلک شگاف نعروں میں دیگر ممالک کے خلاف امریکا کی اقتصادی پابندیوں اور اقتصادی دباؤ کے خاتمے پر زور دیا گیا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ جاپان میں جی 20 رکن ممالک کے اجلاس کے بعد جنوبی کوریا پہنچے جہاں کوریا کے عوام نے سیول میں نو ٹرمپ نو اور گو ٹرمپ گو کے فلک شگاف نعروں سے امریکی صدر کا استقبال کیا۔

اس موقع پر مظاہرین نے دیگر ممالک کے خلاف امریکا کی اقتصادی پابندیوں اور اقتصادی دباؤ کے خاتمے پر تاکید کی۔

اطلاعات کے مطابق امریکی صدر جنوبی کوریا کے صدر مون جے ان سے دوطرفہ تعلقات اور شمالی کوریا کے ساتھ ہونے والے مذاکرات کے تناظر میں جنوبی کوریا پہنچے تھے۔

ٹرمپ نے اپنے ایک ٹوئیٹر بیان میں شمالی کوریا کے صدر کم جونگ ان سے ملاقات کی خواہش کا اظہار بھی کیا تھا، بعد ازاں وہ جنوبی کوریا کا دورہ مکمل کرکے شمالی کوریا پہنچے اور کم جونگ سے ملاقات کی۔

واضح رہے کہ صرف جنوبی کوریا ہی وہ واحد ملک نہیں ہے جہاں ٹرمپ کے خلاف مظاہرے ہوئے بلکہ اس سے قبل جاپان، برطانیہ، بھارت اور خود امریکا سمیت کئی ممالک میں ٹرمپ کی آمد کے موقع پر زبردست احتجاجی مظاہرے ہوئے۔

ڈونلڈ ٹرمپ شمالی کوریا میں قدم رکھنے والے پہلے صدر بن گئے

خیال رہے کہ شمالی کوریا کےچیئرمین کم جون ان نے ٹرمپ کو جنوبی اور شمالی کوریا کے درمیان واقع غیر فوجی علاقے میں ملاقات کی دعوت دی تھی جسے ٹرمپ نے قبول کرتے ہوئے گذشتہ صبح اُن سے ملاقات کی۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے شمالی اور جنوبی کوریا کے غیر فوجی علاقےمیں ہونے والی تاریخی ملاقات کے موقع پر کہا کہ ’یہ تاریخی لمحات میرے ’قابل فخر‘ ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں