ریسرچ کے لیے انٹارکٹیکا جانے والے ہسپانوی نیول کیپٹن کی پُراسرار موت spanish
The news is by your side.

Advertisement

ریسرچ کے لیے انٹارکٹیکا جانے والے ہسپانوی نیول کیپٹن کی پُراسرار موت

اسپین: انٹار کٹیکا میں تحقیق کی غرض سے جانے والی سائنسی ٹیم کے ممبر اور ہسپانوی نیوی کے کیپٹن جیوئیر مونٹوجو پُر اسرار طور پر بحری جہاز سے سمندر میں گر کر ہلاک ہوگئے۔

بین الااقوامی خبر رساں ایجنسی کے مطابق انٹارکٹیکا میں ریسرچ کی غرض سے جانے والے بحری جہاز میں موجود سائنسی ٹیم کے ممبر جیوئیر مونٹوجو سمندر کی لہروں کی نذد ہو گئے، ان کی لاش کو چھ گھنٹے کی تلاش کے بعد سمندر کی گہرائیوں سے نکال لیا گیا، ضروری کارروائی کے بعد نعش کو ارجنٹائن منتقل کردیا گا جہاں سے میت کو اسپین بھیج دیا جائے گا۔

ہسپانوی نیوی حکام کا کہنا ہے کہ نیول کیپٹن کے جہاز سے سمندر میں گرنے کی وجوہات کا تاحال تعین نہیں کیا جا سکا ہے تاہم اس حوالے سے بحری جہاز میں موجود دیگر افراد کے بیانات قلمبند کیے جارہے ہیں۔

ہسپانوی کے نیوی کیپٹن کی جہاز میں غیر موجودگی کا پتہ ہسپانیہ کے جزیرے میں فوجی تنصیبات کے علاقے جین کارلوس میں پتہ چلا اور تلاش بسیار کے بعد ان کی لاش سمندر سے برآمد ہوئی۔

انٹارکٹیکا بھیجے جانے والے بحری جہاز ’’ ہائپرڈڈز ‘‘ کو سمندری حیاتیاتی نظام کے تنوع کی تحقیق کے لیے استعمال کیا جاتا ہے اس کے علاوہ یہ بحری جہاز باقاعدگی سے اسپین کی فوجی تنصیبات کو ضروری سامان کی سپلائی بھی کرتا رہا ہے، اس اہم مشن پر بھیجے جانے والے بحری جہاز کے اہم رکن کی پُراسرار موت کا تاحال تعین نہیں کیا جا سکا ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات  کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں