اسپیکرایازصادق کے جلسے میں بجلی کی چوری پکڑی گئی -
The news is by your side.

Advertisement

اسپیکرایازصادق کے جلسے میں بجلی کی چوری پکڑی گئی

لاہور: اسپیکر قومی اسمبلی سردار ایاز صادق کے جلسے میں بجلی کی چوری پکڑی گئی، ملک کے سب سے معتبر ادارے کے سربراہ نے قانون اور ضابطوں کو بھی پس پشت ڈال دیا۔

اورنج لائن ٹرین اور پانامہ لیکس پر عوامی رابطہ مہم کے سلسلے میں حکمران جماعت مسلم لیگ نون نے سیاسی پنڈال سجانے کیلئے بچیوں کے اسکول کا انتخاب کیا۔

جلسے کیلئے بچیوں کو وقت سے پہلے چھٹی کرا دی گئی۔ ایاز صادق کے جلسے میں کھلے عام بجلی چوری کی جاتی رہی۔ مین لائن کے ساتھ ساتھ اسکول کی بجلی بھی چوری کی گئی۔

جب اسپیکر قومی اسمبلی سے بجلی چوری سے متعلق سوال کیا گیا تو وہ سوال گول کر گئے اور کہا کہ اس کا ازالہ کیا جائے گا۔ جب سردار ایاز صادق سے سوال کیا گیا کہ سرکاری اسکولوں میں جلسے کرنے پر پابندی ہے.

آپ اسپیکر قومی اسمبلی ہوتے ہوئے بھی قانون توڑ رہے ہیں تو اسپیکر صاحب نے یہ کہہ کر بات ہی ختم کر دی کہ سرکاری اسکولوں میں جلسے کرنا غیرقانونی نہیں ہے۔

اس سے پہلے سردار ایاز صادق نے کارکنوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مخالفین کو پاکستان کی ترقی اچھی نہیں لگ رہی، انکوائری کمیشن بااختیار ہو گا اور حقائق قوم کے سامنے لائے جائیں گے۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے اسپیکر ایاز صادق کا کہنا تھا کہ سال دو ہزار سترہ تک بجلی کی لوڈشیڈنگ ختم کردی جائےگی، اسپیکر قومی اسمبلی اپنے جلسے کیلئے بجلی چوری کر رہے تھے لیکن پھر بھی 2017 میں لوڈشیڈنگ کم ہونے کی نوید سنا گئے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں