تمباکو سیکٹر میں ٹیکس وصولیوں کا بحران ہے: کلثوم پروین -
The news is by your side.

Advertisement

تمباکو سیکٹر میں ٹیکس وصولیوں کا بحران ہے: کلثوم پروین

اسلام آباد: سینیٹر کلثوم پروین کا کہنا ہے کہ تمباکو سیکٹر میں ٹیکس وصولیوں کا بحران ہے، تمباکو سیکٹر میں اپنے لوگوں کو نوازنے سے ٹیکس ریونیو میں کمی ہوئی۔

تفصیلات کے مطابق کلثوم پروین کی زیرِ صدارت تمباکو ٹیکسز میں کمی سے متعلق خصوصی کمیٹی کا اجلاس منعقد ہوا، جس میں انھوں نے کہا کہ تمباکو سیکٹر میں اپنے لوگوں کو نوازا جا رہا ہے۔

جو افسران تمباکو سیکٹر کے ٹیکس ریونیو میں کمی کا باعث ہوئے تو ان کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے گی۔

چیئرمین ایف بی آر

کلثوم پروین نے اس موقع پر کہا کہ تمباکو انڈسٹری سے وابستہ افراد کے قریبی عزیز ایف بی آر میں کام کر رہے ہیں۔

دوسری طرف چیئرمین ایف بی آر جہانزیب خان کا کہنا ہے کہ ایف بی آر ملک میں ٹیکس نظام میں بہتری کے لیے اصلاحات کر رہا ہے۔

چیئرمین ایف بی آر نے مزید کہا کہ جو افسران تمباکو سیکٹر کے ٹیکس ریونیو میں کمی کا باعث ہوئے تو ان کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے گی۔

ایف بی آر حکام کے مطابق مالی سال 2016-2017 میں تمباکو سیکٹر سے ٹیکس وصولی میں کمی ہوئی، جب کہ 2017 -2018 میں سیکٹر سے ٹیکس وصولی میں اضافہ ہوا۔


یہ بھی پڑھیں:  تمباکو کی فصل ہزاروں کسانوں کی روزی کا ذریعہ


ایف بی آر حکام نے بتایا کہ 2013۔2014 میں تمباکو سیکٹر سے 88 ارب کا ٹیکس اکٹھا ہوا، 2014-2015 میں تمباکو پر 130 بلین کا ریونیو حاصل ہوا، جب کہ 2015-2016 میں تمباکو سیکٹر سے 111 بلین ٹیکس اکٹھا ہوا۔

ایف بی آر حکام کا یہ بھی کہنا ہے کہ تمباکو سیکٹر سے ٹیکس وصولیوں میں کمی سے متعلق آڈٹ کرایا جائے گا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں