The news is by your side.

Advertisement

پاکستان کی سکھ یاتریوں کیلئےخصوصی مراعات پر بھارت کا انکار

اسلام آباد: بھارت نے روایتی ہٹ دھرمی کا مظاہرہ کرتے ہوئے پاکستان کی جانب سے سکھ یاتریوں کو دی گئی خصوصی مراعات لینے سے انکار کردیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق یکم نومبر کو وزیراعظم عمران خان نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر باباگرونانک کی برسی کے حوالے سے سکھ یاتریوں کیلئےمراعات کااعلان کیاتھا۔

وزیراعظم عمران خان نے ٹوئٹر بیان میں کہا تھا کہ کرتارپور راہداری سے آنے والے سکھ یاتریوں کے لیے پاسپورٹ کی شرط ختم کردی گئی ہےاور 10دن پہلے یاتریوں کی فہرستوں کی فراہمی بھی ختم کردی گئی ہے۔

بھارت نےپاکستانی مراعات لینے سے انکار کرتےہوئے سکھ یاتریوں کےلیے پاسپورٹ کی شرط لازمی قرار دی ہے۔

بھارتی دفتر خارجہ کے ترجمان نےراویش کمار نے کہا ہے کہ کرتارپور راہداری سے پاکستان جانے والے سکھ یاتری اپنے ساتھ پاسپورٹ سمیت ضروری دستاویزات لازمی رکھیں۔

بھارتی ہٹ دھرمی پر ترجمان دفتر خارجہ نے ردعمل دیتےہوئے کہا ہے کہ بھارت نےمراعات مسترد کر کے سکھوں کے جذبات کومجروح کیا۔

ترجمان نے کہا کہ بھارت مراعات سے فائدہ نہیں اٹھاناچاہتاتویہ اس کی مرضی ہے، ہمیں لگتا ہےکہ بھارتی قیادت کرتارپورراہداری پرذہنی الجھاؤکاشکار ہے۔

اس سے قبل اقلیتوں کے حقوق سلب کرنے والی تنگ نظر جماعت بھارتیا جنتا پارٹی(بی جےپی) کے رہنما امیت شاہ نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر ایک پیغام کے ذریعے کرتاپور راہداری منصوبے کا کریڈٹ لینے کی کوشش کی جس پر سینیٹر فیصل جاوید نے فوری ردعمل دیتے ہوئے امیت شاہ کو مودی سرکار کا حقیقی شہرہ دکھا دیا۔

امیت شاہ نےکرتاپور راہداری کو اپنی حکومت کی تاریخی کامیابی قراردیا، جس پر سینیٹر فیصل جاوید نے لکھا کہ کرتارپورراہداری خالصتاًپاکستانی اقدام ہے۔

فیصل جاوید نے لکھا کہ امیت شاہ نےپاکستانی کاوش کوہائی جیک کرنےکی کوشش کی، امیت شاہ سرکارسکھوں کوپاسپورٹ کی فراہمی سےگریزاں ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں