The news is by your side.

Advertisement

’سری لنکا میں مظاہرین صدارتی محل میں تیراکی کرنے گئے‘

کولمبو: سری لنکا میں مشتعل مظاہرین نے صدارتی ہاؤس پر دھاوا بولا اور سوئمنگ پول میں تیراکی کرتے رہے اور صدر کے زیر استعمال لگژری آئٹمز دیکھتے رہے۔

غیرملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق سری لنکا کے مظاہرین نے ہفتے کے روز کولمبو میں صدر گوٹا بایا راجا پکسے کی رہائش گاہ پر دھاوا بول دیا اور متعدد پولیس اور فوجی رکاوٹوں اور آنسو گیس کے گولے داغے جس کی ویڈیوز سوشل میڈیا پر وائرل ہو رہی ہیں اور کئی کلپس میں مقامی لوگوں کو پول میں تیراکی کرتے ہوئے دکھایا گیا ہے۔

دوسروں کو گھر میں گھستے ہوئے دیکھا گیا اور صدر کے ذاتی سامان کی تلاشی لی اس منظر نے سوشل میڈیا پر بہت سے لوگوں کو چونکا دیا ہے کیونکہ ملک میں ہنگامہ آرائی ختم ہونے سے انکاری ہے۔

سری لنکا کے دارالحکومت میں کرفیو نافذ، فوج ہائی الرٹ

ملک بھر میں بڑے پیمانے پر مظاہرے کیے جانے کے بعد بہت سے لوگوں نے سری لنکا کے بحران پر اپنا موقف بیان کیا۔

صدر کے سوئمنگ پول میں لوگوں کے اتفاق سے نہانے کی ویڈیو شیئر کرتے ہوئے لکھا کہ ’لوگوں نے مہنگائی کی وجہ سے ان کے گھر پر دھاوا بولا کیونکہ یہ خود عیش و آرام کی زندگی گزار رہے تھے۔

ملک میں اشیائے ضروریہ کے بحران پر تبصرہ کرتے ہوئے ایک اور ٹویٹر صارف نے لکھا، "شہریوں کے پاس کھانا، گیس نہیں ہے، لیکن، یہ عیش و آرام کی زندگی گزارنے کے لیے ہیں لیکن اب اس پر مظاہرین نے قبضہ کر لیا ہے۔”

Comments

یہ بھی پڑھیں