The news is by your side.

Advertisement

سہیون شریف بم دھماکا کیس : سندھ پراسیکیوشن کی بڑی کامیابی

کراچی : سندھ ہائی کورٹ نے سہیون شریف میں بم دھماکا کیس میں ملزمان کی سزا کے خلاف اپیلیں مسترد کردیں۔

تفصیلات کے مطابق سندھ ہائی کورٹ میں سہیون شریف میں بم دھماکہ کیس میں سندھ پراسیکیوشن نے بڑی کامیابی کرلی ، عدالت نے ملزمان کی سزا کے خلاف اپیلیں مسترد کردیں۔

عدالت نے دہشت گرد نادر علی عرف مرشد اور فرقان کی سزا برقرار رکھنے کا حکم دیتے ہوئے کہا ملزمان کے خلاف انتہائی ٹھوس شواہد پیش کیے گئے ہیں، معصوم انسانوں کو قتل کرنے والے دہشتگرد کسی رعایت کے مستحق نہیں۔

اقبال اعوان پراسیکیوٹر نے بتایا کہ سہیون واقعے میں 80 سے زائد افراد شہید اور 120 سے زائد زخمی ہوئے تھیں، ملزمان کے خلاف سی سی ٹی وی سمیت دیگر جدید شواہد پیش کیے گئے۔

پراسیکیوٹر کا کہنا تھا کہ جرم ثابت ہونے پر ٹرائل کورٹ نے دونوں ملزمان نادر اور فرقان کو 2020 میں 80 بار سزائے موت کا حکم سنایا تھا، عدالت نے لعل شہباز قلندر کے مزار کا تقدس پامال کرنے اور دہشتگردی کی دفعات کے تحت 82 سال الگ سزا سنائی تھی۔

سرکاری وکیل نے کہا کہ کیس میں عبدالستار، اعجاز تنویر سمیت 5 ملزمان تاحال مفرور ہے،2017 میں سیہون شریف میں مزار کے اندر دہشتگرد براہر بروہی نے خود کش دھماکہ کہا تھا ، گرفتار ملزمان نے اعتراف جرم کیا تھا۔

عدالت نے پانچ مفرور ملزمان کے دائمی وارنٹ گرفتاری جاری کردیے، پولیس کے مطابق دونوں ملزمان کا تعلق کالعدم تنظیم آئی ایس آئی ایس سے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں