The news is by your side.

Advertisement

سندھ واٹر کمیشن،راؤ انوار اور ایم ڈی واٹر بورڈ کی سرزنش

کراچی : سندھ ہائیکورٹ میں واٹر کمیشن کے اجلاس میں ریتی بجری کی چوری پر قابو نہ پانے پر ڈی آئی جی ایسٹ اور ایس ایس پی ملیر پر برہمی کااظہار کیا جب کہ کمیشن نے پولیس کو پندرہ دن کی مہلت دیتے ہوئے رینجرز چوکیاں قائم کرنے کا حکم دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق سندھ ہائی کورٹ میں جسٹس اقبال کلہوڑو کی سربراہی میں واٹر کمیشن کے اجلاس میں ڈی آئی جی ایسٹ نے اب تک کارکردگی بتاتے ہوئے کہا کہ علاقے میں ریتی بجری کی چوری کی روک تھام کے لیے تین پولیس چوکیاں قائم کردی ہیں۔

جس پر سندھ ہائی کورٹ کے واٹر کمیشن نے پولیس چوکیوں کی تصاویر اور تفصیلی رپورٹ طلب کرلی ہے جب کہ ڈی آئی جی ایسٹ عارف حنیف کو ریتی اور بجری چوری روکنے اور علا قے میں رینجرز کی چوکیاں قائم کرنے کے لیے پندرہ روز کی مہلت دے دی ہے۔

ایک موقع پر جسٹس اقبال کلہوڑو نے ایس ایس پی راؤ انوار پر برہمی کا اظہار کرتے سوال کیا کہ ریتی بجری کی چوری کیوں نہیں روکی جاسکی ہے؟ اور اب تک پولیس چوکیاں قائم کیوں نہیں ہوئی ؟

ایس ایس پی راو انوار نے پولیس چوکیاں قائم نہ ہونے اور پولیس موبائلنگ کے فقدان پر کمیشن سربراہ کو جواب دیتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ نفری کی کمی کا سامنا ہے جس کو پورا کرنے کے لئے درخواست دیں گے تاکہ اضافی نفری تعینات کی جاسکے۔

دوسری جانب واٹر کمیشن نے شہر میں صاف پانی کی عدم فراہمی پر ایم ڈی واٹر بورڈ کی سخت سرزنش کی اور شہریوں کو صاف پانی کی فراہمی کے ہر ممکن اقدامات کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے اجلاس ملتوی کردیا۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں