The news is by your side.

Advertisement

مرکزی بینک کا رہن سے پاک قرضہ اسکیم سے متعلق بڑا فیصلہ

کراچی: اسٹیٹ بینک آف پاکستان نے چھوٹے اور درمیانے درجے کے ایس ایم ایز کے لئے نئی قرضہ اسکیم متعارف کرادی ہے۔

اسٹیٹ بینک کی جانب سے جاری پریس ریلیز کے مطابق ملک میں پہلی بار مرکزی بینک نے ایس ایم ایز کے لے رہن سے پاک قرضے کی ایک جامع اسکیم متعارف کرائی ہے، اسکیم کے تحت 20 بینکوں نے اپنی قسمت آزمائی۔

کامیاب قرار پانے والوں میں حبیب بینک لمیٹڈ، یونائیٹڈ بینک لمیٹڈ، الائیڈ بینک، میزان بینک، بینل الفلاح، بینک آف پنجاب ، جے ایس بینک اور بینک آف خیبر شامل ہیں۔

مرکزی بینک کی پریس ریلیز کے مطابق اسکیم کو ” صاف” کا نام دیا گیا ہے، جس کا مطلب ہے ضمانت کے بغیر فنانس۔

یہ بھی پڑھیں: اسٹیٹ بینک نے چار بینکوں پر 465 ملین روپے جرمانہ عائد کردیا

مذکورہ اسکیم کو اگست 2021 میں متعارف کرایا گیا تھا، اسکیم کے تحت اسٹیٹ بینک ایک فیصد سالانہ پر بینکوں کو ری فنانس فراہم کرے گا جو زیادہ سے زیادہ 9 فیصد سالانہ تک کی شرح سے ایس ایم ایز کو قرضہ فراہم کرے گا۔

مرکزی بینک سے جاری کردہ اعلامیہ کے مطابق صاف ری فنانس اور کریڈٹ گارنٹی سہولت ہے جو ایک وسیع مشاورتی عمل سے تیار کی گئی ہے۔ اس کا مقصد ان ایس ایم ایز کی معاونت کرنا ہے جو قرض کے حصول کے قابل ہیں لیکن ان کی فنانس تک رسائی نہیں کیونکہ وہ سیکورٹی پیش نہیں کر سکتیں جو بینک ضمانت کے طور پر مانگتے ہیں۔

اسٹیٹ بینک کا مزید کہنا تھا کہ صاف اسکیم کے لیے حکومت پاکستان 60 فیصد تک رسک کوریج فراہم کر رہی ہے۔

گورنر اسٹیٹ بینک رضا باقر نے اسکیم کو شاندار قرار دیتے ہوئے اس کی جلد اجرا پر زور دیا، ساتھ ہی گورنر اسٹیٹ بینک نے اسکیم ‘صاف ‘ کے شریعت سے ہم آہنگ ورژن کی دستیابی پر زور دیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں