The news is by your side.

Advertisement

40 ہزار روپے مالیت کے پرائز بانڈ لازمی رجسٹر کرانے کا فیصلہ

اثاثےظاہرکرنےکی اسکیم کےلیے پانچ ہزار افراد نے درخواست دی

اسلام آباد : فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر ) نے کہا 40 ہزارروپے مالیت کےپرائزبانڈلازمی رجسٹرکرانےکا فیصلہ کیا گیا ہے ، بانڈ رجسٹر ہونے سے ایمنسٹی حاصل کرنے والوں کی تعدادمیں اضافہ ہوگا۔

تفصیلات کے مطابق فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر ) نے کہا اثاثےظاہرکرنےکی اسکیم کےلیے پانچ ہزار افراد نے درخواست دی ہے اور درخواست دینے والوں کی تعداد میں اضافہ ہورہا ہے۔

ایف بی آر کا کہنا تھا چالیس ہزارروپے مالیت کےپرائزبانڈلازمی رجسٹرکرانےکا فیصلہ کیا گیا ہے، اسٹیٹ بینک ایک دو روز میں سرکلر جاری کرے گا، بانڈ رجسٹر ہونےسے ایمنسٹی حاصل کرنے والوں کی تعدادمیں اضافہ ہوگا۔

ایف بی آر نے مہنگی کاریں خریدنے اور فضائی سفر کرنے والوں کاڈیٹاحاصل کرلیا ہے، بینک بھی پندرہ جون تک تمام ڈیٹا ایف بی آر کو فراہم کردیں گے۔

شہری نادرا کے پاس موجود اپنا معاشی ڈیٹا پانچ سو روپےدےکرحاصل کرسکتےہیں جبکہ ایف بی آر سے چالیس لاکھ افراد کا ڈیٹا آن لائن مفت حاصل کیا جاسکتا ہے۔

گذشتہ روزچیئرمین ایف بی آر شبرزیدی نے کہا تھا کہ ہمیں پہلے یہ طے کرنا ہو گا کہ ٹیکس کہاں کہاں سے آ رہا ہے، جہاں جہاں سے ٹیکس نہیں آ رہا،  ان اہداف کے پیچھے جائیں گے، فائلرز کی تعداد بڑھانا ہی کامیابی ہو گی، ایسیٹ ڈکلیریشن اسکیم کے نتائج آنا ابھی باقی ہیں۔

یاد رہے چند روز قبل وزیر اعظم عمران خان نے قوم کے نام اپنے پیغام میں کہا تھا کہ اداروں کے پاس تمام بے نامی اکاؤنٹس اور جائیدادوں کی تفصیل موجود ہے ، 30 جون تک وقت ہے اپنے اثاثے ظاہر کریں، ٹیکس نہیں دیں گے تو ہمارا ملک اوپر نہیں اٹھے گا۔

انھوں نے اپیل کی تھی کہ تمام پاکستانی اثاثے ظاہر کرنے کی اسکیم کا حصہ بنیں، عظیم قوم بننا چاہتے ہیں تو خود کو بدلنا ہوگا، جب تک کوئی قوم کوشش نہ کرے اللہ اس کی حالت نہیں بدلتا۔ ’اسکیم کا فائدہ اٹھائیں اور اپنے بچوں کا مستقبل بہتر کریں‘۔

خیال رہے کہ 4 جون کو ہونے والے کابینہ اجلاس میں وزیر اعظم عمران خان نے 30 جون کے بعد ٹیکس چوروں کے خلاف کریک ڈاؤن کا عندیہ دیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں