گذشتہ حکومتوں کی غلط پالیسیوں کے باعث آئی ایم ایف تک گئے: حکومتی اعلامیہ
The news is by your side.

Advertisement

گذشتہ حکومتوں کی غلط پالیسیوں کے باعث آئی ایم ایف کے پاس جانا پڑا: حکومتی اعلامیہ

آئی ایم ایف پروگرام کا فیصلہ ماہرین معاشیات سے مشاورت سے کیا گیا

اسلام آباد:  پی ٹی آئی حکومت کا کہنا ہے کہ پاکستان 1990 کے بعد 10 بار  آئی ایم ایف پروگرام لے چکا ہے.

تفصیلات کے مطابق وزیر خزانہ کے آئی ایم ایف سے رجوع کرنے کے بیان کے بعد حکومت پاکستان نے اس ضمن میں اعلامیہ جاری کیا ہے.

اس وقت پاکستان کا کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ دو ارب ڈالر ماہانہ ہے

حکومتی اعلامیہ

اعلامیہ کے مطابق یہ پہلی بارنہیں کہ حکومت آئی ایم ایف کا پروگرام لے رہی ہے، پاکستان گذشتہ تین عشروں‌ میں‌ 10 بار آئی ایم ایف پروگرام لے چکا ہے.

حکومت کے مطابق آئی ایم ایف پروگرام کا فیصلہ ماہرین معاشیات سے مشاورت سے کیا گیا، گذشتہ حکومتوں کی غلط پالیسیوں کے باعث ہرحکومت آئی ایم ایف تک گئی۔

اعلامیہ کے مطابق اس وقت پاکستان کا کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ دو ارب ڈالر ماہانہ ہے، پاور  سیکٹرخسارہ ایک ہزارارب روپے سے زیادہ ہے، جس کی مثال نہیں ملتی.

مزید پڑھیں: معاشی بحران کے حل کے لئے حکومت کا آئی ایم ایف کے پاس جانے کا فیصلہ

اعلامیہ کے مطابق ترامیمی فنانس ایکٹ بھی ان حالات کی وجہ سےلانا پڑا، اسٹیٹ بینک نے پالیسی ریٹ میں اضافہ معاشی استحکام کے لئے کیا. حکومت آئی ا یم ایف کا پروگرام لے کر بنیادی اصلاحات لائے گی، اصلاحات کے بعد پھرآئی ایم ایف کی ضرورت نہیں رہے گی.

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں