اسٹیفن ہاکنگ کی وہیل چیئر لاکھوں ڈالرز میں فروخت -
The news is by your side.

Advertisement

اسٹیفن ہاکنگ کی وہیل چیئر لاکھوں ڈالرز میں فروخت

لندن: آنجہانی سائنسدان اسٹیفن ہاکنگ کے زیراستعمال خود کار وہیل چیئر کو 10 لاکھ ڈالرز میں نیلام کردیا گیا۔

برطانوی میڈیا کے مطابق اسٹیفن ہاکنگ کے مقالے اور زیراستعمال دیگر اشیا نیلامی کے لیے 8 نومبر کو پیش کی گئیں جس میں ایک شخص نے وہیل چیئر کی بولی لگا کر اُسے خریدا۔

آنجہانی سائنس دان کی 22 اشیاء نیلامی کے لیے پیش کی گئیں، بولی میں حصہ لینے والے خواہش مند افراد نے چیزوں کی آن لائن  کی قیمتیں بھی لگائیں۔

اسٹیفن ہاکنگ کے مقالے اور دیگر خطوط بھی نیلامی کے لیے پیش کیا گیا، سائنسی دستاویزات کی قیمت 13 لاکھ سے ساڑھے 19 لاکھ جبکہ وہیل چیئر کی 10 سے 15 لاکھ  امریکی ڈالر قیمت رکھی گئی تھی۔

مزید پڑھیں: اسٹیفن ہاکنگ کی اشیا نیلامی کے لیے پیش

لندن میں واقع کرسٹی نیلام گھر میں اشیاء کی نیلامی کا پروگرام شروع ہوا تو سب سے پہلے لوگوں نے وہیل چیئر کی خریداری میں دلچسپی ظاہر کی، برطانوی شہری نے سب سے زیادہ 10 لاکھ امریکی ڈالر (تیرہ کروڑ 35 لاکھ روپے) بولی لگا کر وہیل چیئر حاصل کی  جبکہ آنجہانی سائنس دان کے ایک مقالے کو دوگنی رقم ڈیڑھ لاکھ پاؤنڈ میں فروخت کیا گیا۔

UK Stephen Hawking - Auktion bei Christie's (picture-alliance/Photoshot/Ray Tang)

اسٹیفن ہاکنگ کے سن 1965 میں لکھے گئے ایک سو ستر صفحاتی مقالے ’پراپرٹیز آف ایکسپینڈنگ یونیورسز‘  کو  قریب پانچ لاکھ پچاسی ہزار پاؤنڈز میں فروخت کیا گیا۔

default

آنجہانی سائنس دان کی صاحبزادی لوسی نے اعلان کیا کہ اشیاء کی نیلامی سے حاصل ہونے والی رقم ’ ہاکنگ ویلفیئر‘ میں عطیہ کی جائے گی، اس اقدام سے اسٹیفن کے چاہنے والوں کو اُن کی غیر معمولی زندگی کے بارے میں بھی جاننے کا موقع ملے گا۔

واضح رہے کہ رواں سال 14 مارچ کو معروف سائنس دان اسٹیفن ہاکنگ 76 سال کی عمر میں انتقال کرگئے تھے وہ طویل عرصے سے معذوری کا شکار تھے۔

یہ بھی پڑھیں: متعدد کائناتوں کی موجودگی سے متعلق اسٹیفن ہاکنگ کی آخری تحقیق

ہاکنگ کو آئن اسٹائن کے بعد پچھلی صدی کا سب سے بڑا سائنس دان قرار دیا جاتا ہے۔ ان کا مخصوص شعبہ بلیک ہولز اور تھیوریٹیکل کاسمولوجی تھا۔

اسٹیفن کی تصنیف ’وقت کی مختصر تاریخ‘ بریف ہسٹری آف ٹائم‘ کو دنیا میں  سب سے زیادہ پڑھی جانے والی کتاب کا اعزاز بھی حاصل ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں