The news is by your side.

Advertisement

امریکی سینیٹ میں افغان جنگ کے خاتمے کا بل پیش

واشنگٹن: امریکی سینیٹ میں افغان جنگ کے خاتمے کا بل پیش کردیا گیا جس کے ذریعے امریکا افغانستان میں اپنی فتح کا اعلان کرے گا اور 45 روز میں فوجی انخلا کا لائحہ عمل طے کرے گا۔

تفصیلات کے مطابق امریکی سینیٹ میں افغان جنگ کے خاتمے کا بل ری پبلکن سینیٹر رینڈ پال اور ڈیموکریٹس کے سینٰٹر ٹام اوڈال نے پیش کیا۔

بل کو افغان ایکٹ 2019 کا نام دیا گیا جس کی منظوری ہوتے ہی امریکا افغان جنگ میں جیت کا اعلان کرےگا جبکہ بل کے متن میں درج ہے کہ 45 روز میں ہی افغانستان سےامریکی فوج کی واپسی کالائحہ طےکیا جائے گا۔

نمائندہ اے آر وائی فرید قریشی کے مطابق بل منظور ہونے پر ایک سال میں امریکی فوجی افغانستان سے واپس بلالی جائے گی۔

خیال رہے کہ امریکی دارالحکومت واشنگٹن میں گذشتہ روز پریس کانفرنس کرتے ہوئے نائب ترجمان امریکی محکمہ خارجہ کا کہنا تھا کہ ملا برادر کی قیادت میں طالبان وفد سے امریکی ٹیم افغان امن پر گفتگو کر رہی ہے اور پیش رفت بھی جاری ہے۔

دوسری جانب افغان طالبان کا قطر میں ہونے والے امن مذاکرات سے متعلق کہنا تھا کہ امریکا کے ساتھ امن مذاکرات جاری ہیں لیکن ابھی تک کوئی معاہدہ نہیں ہوسکا ہے۔

افغان طالبان سے مذاکرات میں پیش رفت ہو رہی ہے: امریکا

افغان طالبان اور امریکا کے درمیان مذاکرات کا مقصد افغان میں گزشتہ 17 سال سے جاری جنگ کا خاتمہ اور افغانستان سمیت خطے کے دیگر ممالک میں امن و امان کا قیام ہے۔

امریکا نے افغانستان سے اپنی فوج کے انخلاء کا اعلان کیا ہے جبکہ طالبان کی جانب سے ایک بیان میں کہا گیا تھا کہ افغان طالبان افغانستان سے داعش کا چند دنوں میں خاتمہ کرسکتے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں