The news is by your side.

Advertisement

اقرار الحسن کی درخواست ضمانت منظور

کراچی: اے آر وائی نیوز کے اینکر اقرار الحسن کی ضمانت منظور کرلی گئی۔ اس سے قبل انہیں 3 روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کردیا گیا تھا۔

My father is a brave man and is a patriotic… by arynews

تفصیلات کے مطابق اقرار الحسن کو ساری رات تھانے میں رکھنے کے بعد آج صبح سٹی کورٹ میں پیش کیا گیا۔ اس موقع پر اقرار کا کہنا تھا کہ سچ کو بے نقاب کرنے کی پاداش میں ان کے ہاتھوں میں آج ہتھکڑیاں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ میں مطمئن ہوں کہ میں نے کوئی غلط کام نہیں کیا۔ میرا بیٹا مجھ پر فخر کرتا ہے اور میں اس پر خوش ہوں۔

اقرار الحسن کی ضمانت دفعہ 452 اور 188 میں منظور کی گئی۔ انہیں 50 ہزار روپے کے مچلکے جمع کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔ سرعام کے ٹیم ممبر کامران کی بھی ضمانت منظور کرلی گئی ہے۔


Iqrar wants to unveil the truth by arynews

اے آروائی نیوز کے تحقیقاتی پروگرام ’سرعام‘ کے میزبان اقرار الحسن کل سندھ اسمبلی میں اسٹنگ آپریشن کرتے ہوئے سیکیورٹی انتظامات میں نقائص منظر عام پر لائے تھے۔

اقرار الحسن سندھ اسمبلی میں اپنے ایک ساتھی کے ہمراہ لائسنس یافتہ آتشیں حملے کے ساتھ سندھ اسمبلی کے ایوان میں داخل ہونے میں کامیاب ہوگئے اور حکومتی نمائندوں کو دکھایا کہ جس سیکیورٹی کے سہارے وہ یہاں بیٹھے ہیں وہ کس قدر ناقص ہے۔

iqrar-1

اس موقع پر بجائے اس کے کہ اقرار الحسن کو سراہا جاتا، انہیں اور ان کے ساتھی کو گرفتار کرلیا گیا تھا۔

iqrar-2

وزیر داخلہ سہیل انور سیال نے ڈی آئی جی ساؤتھ مجیب شیخ کی سربراہی میں تحقیقاتی کمیٹی قائم کردی ہے جو تحقیقات کرے گی کہ آیا سندھ اسمبلی کے عملے میں سے کوئی شخص اس کاروائی میں شریک ہے۔ جو بھی اس معاملے میں شریک ہوگا اس کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔

iqrar-3

iqrar-4

اقرار الحسن پر دھوکہ دہی اور غیر قانونی اسلحہ رکھنے کے 2 مقدمات درج کیے گئے تھے۔

واضح رہے کہ اس سے قبل ریلوے کے خلاف اسی قسم کا اسٹنگ آپریشن کرنے پر لاہور ہائیکورٹ نے اپنے تاریخ ساز ریمارکس میں کہا تھا کہ ’اقرار الحسن قوم کے محسن ہیں‘ اور یہ ریمارکس دے کر اقرار اوران کے ٹیم ممبران کو باعزت بری کیا تھا۔

اے آر وائی نیوز کے اینکر پرسن اور ان کی ٹیم کی گرفتاری پر ملکی و غیر ملکی صحافتی تنظیموں نے شدید مذمت کی ہے۔ صحافتی تنظیموں نے اقرار الحسن کو فوری طور پر رہا کرنے کا مطالبہ بھی کیا۔ اقرار الحسن کے بیٹے نے اپنے والد کا ساتھ دینے پر تمام لوگوں کا شکریہ ادا کیا اور اس عزم کا اظہار کیا کہ وہ بھی بڑا ہو کر ’سرعام‘ بنے گا۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں