site
stats
سندھ

کراچی میں جرائم پیشہ افراد بے قابو، لوٹ مار کی وارداتوں میں اضافہ

کراچی : شہر قائد میں اسٹریٹ کرائمز میں تیزی آگئی، شہری خوف زدہ ہوگئے، سنسان سڑکوں پرموٹرسائیکل سوار ملزمان کی لوٹ مار کا سلسلہ تا حال جاری ہے۔

شہر میں روزانہ 80 سے زیادہ موبائل فون چھیننے جارہے ہیں، موٹرسائیکل اورگاڑیوں کی چوریاں بھی عروج پرہیں، اس کے علاوہ چلتی بسوں میں مسافروں کی جیب کا صفایا بھی ہونے لگا۔

کراچی میں رمضان المبارک میں اسٹریٹ کرائمز میں کمی کے بجائےخطرناک حد تک اضافہ ہوگیا مسلح افراد موٹرسائیکل پر آتے ہیں۔ شہریوں کو لوٹ کریہ جااور وہ جا۔

روزانہ کم سے کم اٹھاسی شہری موبائل فون سےمحروم کردیےجاتےہیں، موبائل چھیننےوالے خواتین کے پرس اور بٹوے پر بھی ہاتھ صاف کرجاتے ہیں۔

کراچی میں روزانہ اوسطاً چارشہری اپنی گاڑی سے محروم کیے جارہے ہیں۔ رپورٹ کے مطابق یومیہ چوّن موٹرسائیکلیں چھیننی اورچوری کی جارہی ہیں۔

اسٹریٹ کرائم میں گلشن ٹاؤن ، لیاقت آباد، جمشید ٹاؤن سرفہرست ہیں، یہ تو وہ واقعات ہیں جو رپورٹ ہوجاتے ہیں کتنے ہی شہری پولیس اور تھانوں کے چکر میں پڑنا ہی نہیں چاہتے۔

رمضان المبارک میں شیطان تو قید ہوتے ہیں۔ لیکن کراچی والوں کی جان لٹیروں سے نہیں چھوٹتی۔

 

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top