The news is by your side.

Advertisement

کالعدم نفاذ شریعت محمدی کے امیرصوفی محمد کو رہا کردیا گیا

پشاور:کالعدم نفاذ شریعت محمدی کے امیرصوفی محمد کو رہا کر دیا گیا، صوفی محمد2009سے پشاورسینٹرل جیل میں قید تھے۔

تفصیلات کے مطابق کالعدم نفاذشریعت محمدی کے امی صوفی محمد کو پشاورہائیکورٹ کےاحکامات پررہا کیاگیا ہے، صوفی محمد پر خصوصی عدالت میں 21مقدمات نمٹا دیئے گئے۔

صوفی محمد کو صوبائی حکومت کے دیئے گئے بگلہ نما سب جیل سے رہا کیا گیا، صوفی محمد کوسب جیل میں  9نومبر کومنتقل کیا گیا تھا۔

یاد رہے 8 جنوری کو  پشاور ہائیکورٹ نے کالعدم نفاذ شریعت محمدی کے امیر مولانا صوفی محمد کی ضمانت کی درخواست منظور کرتے ہوئے رہائی کے احکامات جاری کئے تھے۔


مزید پڑھیں :  مولانا صوفی محمد کی درخواست ضمانت منظور


صوفی محمد کوسب جیل میں  9نومبر کومنتقل کیا گیا تھا۔

واضح رہے کہ3 جولائی2009کو مولانا صوفی محمد کیخلاف حکومت مخالف تقاریر ودیگر الزامات پر ایف آئی آر درج کی گئی تھی،  دو بیٹوں اور کمانڈر سفیر اللہ کو بھی اس مقدمے میں نامزدکیا گیا تھا۔

بعد ازاں 26 جولائی 2009 کو پشاور سے ان کے دو بیٹوں ضیا اللہ اور رضوان اللہ سمیت حراست میں لیا گیا تھا۔

مولانا کیخلاف غیر قانونی جلسے، کارسرکار میں مداخلت اور دہشت گردی کے تین مقدمات پشاور سینٹرل جیل میں زیر سماعت تھے

خیال رہے کہ 2007 میں وادی سوات میں اٹھنے والی انتہا پسندانہ تحریک میں بھی صوفی محمد کا مرکزی کردار تھا تاہم اس مزاحمتی تحریک کو پاکستانی فوج کے ایک خصوصی آپریشن میں اپریل 2009 میں ختم کر دیا گیا تھا۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر ضرور شیئر کریں۔ 

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں