The news is by your side.

Advertisement

شوگرملز منتقلی کیس : عدالت نے تفصیلی فیصلہ جاری کردیا

لاہور : وزیراعظم کے بھائی کی شوگرملز کی منتقلی پر لاہورہائیکورٹ کا تفصیلی فیصلہ آگیا، عدالت نے کہا ہے کہ ذاتی مفاد کو ملکی مفاد پرترجیح دی گئی، ذاتی کاروبار کو قومی مفاد پر ترجیح دی گئی۔ شوگر مل کی منتقلی قانون کی خلاف ورزی ہے اس کی اجازت نہیں دی جا سکتی۔

تفصیلات کے مطابق لاہور ہائی کورٹ کی جسٹس عائشہ اے ملک نے وزیراعظم کے بھائی کی چوہدری شوگرملز کی منتقلی کیس پر چالیس صفحات پر مشتمل تفصیلی فیصلہ جاری کردیا ہے۔

فیصلے میں عدالت نے قرار دیا ہے کہ حکومت نے 2006 سے نئی شوگر مل بنانے یا اسے ایک علاقے سے دوسرے علاقے منتقلی پر پابندی عائد کر رکھی ہے۔

کپاس کے پیداواری علاقوں میں مل بنانے پر مکمل پابندی عائد ہے جس کا مقصد کپاس کی پیداوا اور ماحول کو متاثر ہونے سے بچانا ہے، سپریم کورٹ میں بھی پنجاب حکومت نے اس پالیسی کی حمایت کی تھی۔

فیصلے میں کہا گیا کہ وزیراعظم کے بھائی کی شوگر مل کی رحیم یار خان منتقلی کی اجازت دینے سے ظاہر ہوتا ہے کہ ذاتی کاروبار کو قومی مفاد پر ترجیح دی گئی۔

حکومت پنجاب اپنی ہی پالیسی کی خلاف ورزی کیسے کر سکتی ہے، عدالت نے اپنے فیصلے میں چوہدری شوگر ملز کی رحیم یار خان منتقلی کو غیر قانونی اور حکومتی نوٹیفیکیشن کو کالعدم قرار دے دیا۔

 

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں