site
stats
بزنس

سوئی گیس کی چوری، انٹیلی جنس ونگ تشکیل

کراچی: سوئی سدرن گیس کمپنی نے گیس چوری کی روک تھام کے لیے انٹیلی جنس ونگ تشکیل دے دیا جس کے تحت گیس چوری کرنے والوں کے خلاف کاروائی کی جائے گی اور چھ ماہ قید سمیت ایک کروڑ روپے تک جرمانہ عائد کیا جاسکے گا۔

سوئی سدرن گیس کمپنی کے ڈ ی جی سیکیورٹی سروسز اینڈ گیس تھیفٹ بریگیڈیئر (ر)محمدابو ذر نے میڈیا بریفنگ میں بتایا کہ ادارے نے گیس چوری کے خلاف آپریشن کا آغاز کر دیا ہے۔

چوروں کے خلاف جدید ریڈار سسٹم متعارف

انہوں نے بتایا کہا ادارہ پہلی بار جدید ریڈار بھی متعارف کروارہا ہے جس کے ذریعے زمین کے اندر پائپ لائن سے گیس چوری کا پتا چلایا جا سکے گا، صنعتوں یا فیکٹریو ں کے گیس چوری میں ملوث ہونے پر کسی ملازم کے خلاف نہیں بلکہ صرف مالک کے خلاف ایف آئی آر درج ہو گی۔

گیس چوروں کے خلاف 21 عدالتیں قائم

انہوں نے آگاہ کیا کہ سندھ میں گیس چوروں کے خلاف قانونی کارروائی کے لیے 21 گیس یوٹیلٹی کورٹس اور بلوچستان میں 11 کورٹس قائم کیے گئے ہیں جو گیس چوری ،کنٹرول اینڈ ریکوری ایکٹ کے تحت سزائیں دیں گی۔

بریگیڈیئر (ر) محمدابو ذر نے کہا کہ انڈسٹریل گیس چوری یا میٹر ٹیمپرنگ پر 50 لاکھ روپے تک جرمانہ اور 10 سال قید ہوگی،گھریلو گیس کی چوری اور میٹر ٹیمپرنگ پر 10 لاکھ روپے جرمانہ اور چھ ماہ کی سزا ہوگی۔

ان کا کہنا تھا کہ گیس کی چوری کے واقعات میں کمپنی کے ملازمین کے ملوث ہونے کے حوالے سے تحقیقات کررہے ہیں، ٹھوس شواہد سامنے آئے تو ایسے ملازمین کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی، ایک ماہ کے دوران 10 بڑے گیس چوروں کے خلاف ایف آئی درج کی گئی ہیں۔

بریگیڈیئر (ر)محمدابوذر نے مزید کہا کہ بلوچستان سمیت ملک بھر میں گیس پائپ لائن کو نقصان پہنچانے دھماکا خیز موادسے اڑانے والے ملزمان کو سخت سزائیں دی جائیں گی، کراچی کی مختلف مارکیٹوں میں گیس سے بڑے بڑے جنریٹر چلائے جاتے ہیں اور فی دکان دو ہزار روپے وصول کیے جاتے ہیں ،یہ رقم آگے جاکر جرائم کی وارداتوں میں استعمال کی جاتی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top