The news is by your side.

Advertisement

افغانستان میں نائب صدر کے قافلے پر خودکش حملہ، 10 افراد ہلاک

کابل: افغانستان کے دارالحکومت کابل میں نائب صدر رشید دوستم کے قافلے پر خودکش حملے کے نتیجے میں 10 افراد ہلاک اور 40 زخمی ہوگئے، نائب صدر اس حملے میں محفوظ رہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق افغانستان کے نائب صدر رشید دوستم ترکی میں جلاوطنی کے بعد آج حامد کرزئی ایئرپورٹ کابل پہنچے جہاں اعلیٰ حکام اور حامیوں نے ان کا استقبال کیا تاہم جیسے ہی قافلہ اپنی منزل کی جانب روانہ ہوا تو ایک زور دار دھماکا ہوا جس کے نتیجے میں 10 افراد ہلاک اور 40 زخمی ہوگئے۔

کابل پولیس کے ترجمان کے مطابق دھماکا حامد کرزئی انٹرنیشنل ایئرپورٹ کے داخلی دروازے پر ہوا جہاں بڑی تعداد میں لوگ رشید دوستم کا استقبال کرنے کے لیے موجود تھے، ہلاک ہونے والوں میں زیادہ تعداد سیکیورٹی اہلکاروں کی بتائی جارہی ہے۔

رشید دوستم کے ترجمان کے مطابق دھماکے کے نتیجے میں رشید دوستم کے استقبال کے لیے آئی متعدد گاڑیوں کو نقصان پہنچا تاہم بکتر بند گاڑی میں ہونے کی وجہ سے افغانستان کے نائب صدر محفوظ رہے۔

اسپتال انتظامیہ کے مطابق اب تک 10 لاشیں اسپتال لائی گئی ہیں جبکہ 40 سے زائد زخمیوں کو داخل کیا گیا ہے جن میں 12 کی حالت نازک بتائی جارہی ہے، ہلاکتوں میں اضافہ کا خدشہ ہے۔

واضح رہے کہ رشید دوستم کو 2014 میں افغانستان کا نائب صدر منتخب کیا گیا تھا تاہم انہیں جنگی جرائم کے باعث 2017 میں کابل چھوڑنا پڑا تھا، اس کے باوجود ان سے عہدہ واپس نہیں لیا گیا تھا، افغان صدر اشرف غنی کی درخواست پر رشید دوستم ترکی میں ایک سال سے زائد عرصے کی جلاوطنی ختم کرکے کابل پہنچے ہیں۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔ 

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں