site
stats
دہشت گردی

کابل مسجد حملہ: شہدا کی تعداد 32 ہوگئی، داعش نے ذمہ داری قبول کرلی

کابل: افغانستان کے دارالحکومت کابل میں واقع ایک مسجد میں دورانِ نماز خودکش حملے کے نتیجے میں جاں بحق افراد کی تعداد 32 ہوگئی، تیس سے زائد افراد زخمی ہیں،حملے کی ذمہ داری داعش نے قبول کرلی۔

تفصیلات کے مطابق خود کش دھماکا کابل میں واقع اہل تشیع مکتبہ فکر کی مسجد باقر العلوم میں ہوا جس کے نتیجے میں 27 نمازی شہید اور متعدد افراد زخمی ہو گئے، بعدازاں زخمی افراد کے دم توڑنے سے یہ تعداد 32 ہوگئی،خود کش دھماکے وقت مسجد میں بڑی تعداد میں نمازی موجود تھے۔

post1

افغان سیکیورٹی حکام کا کہنا ہے کہ خود کش حملہ آور پیدل آیا تھا اور دوران ادائیگی نماز مسجد کی صفوں میں شامل ہو کر خود کو دھماکے سے اڑا لیا۔

post2

دھماکے کی اطلاع ملتے ہی امدادی ادارے فوری طور پر جائے وقوع پر پہنچ گئے اور جاں بحق و زخمی افراد کو قریبی اسپتال منتقل کیا جنہیں طبی امداد دی جا رہی ہے اسپتال میں ایمرجنسی نافذ کر دی گئی۔ متعدد زخمیوں کی حالت تشویش ناک ہے جس کے سبب شہادتوں میں اضافے کا خدشہ ہے۔

post3

افغان حکام کے مطابق خود کش حملے کے محرکات کا جائزہ لے رہے ہیں، جائے وقوع سے اہم ابتدائی شواہد اکٹھے کر لیے ہیں تا ہم پہلی ترجیح حادثے کے متاثرین کو امداد فراہم کرنا ہے۔

عالمی میڈیا کے مطابق حملے کی ذمہ داری داعش(دولت اسلامیہ عراق و شام) نے قبول کرلی۔

ایک عالمی جریدے کے مطابق دھماکے  میں  ہلاکتوں کی تعداد 32 ہے۔

واضح رہے کہ افغانستان میں حکومت کی تبدیلی کے بعد سے حکومت اور افغان طالبان کے درمیان چپقلش بڑھ گئی ہے جب کہ داعش بھی افغانستان کے کچھ علاقوں میں قابض ہو چکی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top