The news is by your side.

Advertisement

سکھر: سانپ کے کاٹنے سے کم سن بچی جاں بحق، ورثا کا احتجاج

سکھر: صوبہ سندھ کے ضلع سکھر میں سانپ کے ڈسنے کا افسوسناک واقعہ رونما ہوا، واقعے میں بچی کی جان چلی گئی۔

تفصیلات کے مطابق سکھر کے نواحی علاقے ٹھکراٹو کے ایک گھر میں سانپ نے آٹھ سالہ بچی کو ڈس لیا، واقعے کے بعد بچی کو طبی امداد کے لئے ٹھکراٹو صحت مرکز لے جایا گیا، جہاں ڈیوٹی پر موجود عملے نے بتایا کہ یہاں سانپ کے ڈسنے کی ویکسین موجود نہیں۔

اہل خانہ کے مطابق بچی کو زخمی حالت میں دوسرے اسپتال منتقل کیا گیا، جہاں بھی یہ سننے کو ملا کہ سانپ کی ویکسین موجود نہیں اسی دوران بچی کی حالت تشویشناک ہوتی گئی، بچی کو میرپور ماتھیلو اسپتال منتقل کیا جارہا تھا کہ بچی راستے میں دم توڑ گئی۔

واضح رہے کہ سندھ میں سانپ کے کاٹنے کے سب سے زیادہ واقعات صحرائے تھر میں پیش آتے ہیں، وجہ یہ ہے کہ موسم گرما کےآغاز پر ریتیلی زمین سے بڑی تعداد میں باہر نکلتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: کتے اور سانپ کے کاٹنے کی ویکسین کی تیاری، سندھ حکومت نے لیبارٹری قائم کردی

محکمہ سندھ کی جانب سے جاری اعدادوشمار کے مطابق کئی افراد گھریلو ٹوٹکے استعمال کرنے کے نتیجے میں موت کی آغوش میں چلے جاتے ہیں۔

یاد رہے کہ سندھ حکومت نے گذشتہ سال شہید بے نظیر آباد کے علاقے میں پاکستان کی پہلی اور ایشیا کی دوسری لیبارٹری قائم کی جو کتے اور سانپ کے کاٹنے کی ویکسین تیار کرے گی۔

سندھ حکومت کی جانب سے جاری اعلامیے کے مطابق لیبارٹری کتے اور سانپ کے کاٹنے سے پہنچنے والے نقصان کی ویکسین تیار کرے گی، لیبارٹری نے صوبائی حکومت کی ضروریات پوری کرنے کے لیے اپنا قائم شروع کردیا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں