site
stats
سندھ

لینس ڈاؤن برج، ریلوے حکام نے وزیراعظم کے احکامات ہوا میں اڑادئیے

سکھر : وزیر اعظم کے واضح احکامات کے باوجود سندھ کا قومی ورثہ قرار دیئے جانے والے لینس ڈاؤن برج کو محکمہ ریلوے نے قبول کرنے سے انکار کردیا، حکام کا کہنا ہے کہ یہ برج کسی استعمال میں نہیں ہے دیکھ بھال نہیں کر سکتے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم کے قریبی ساتھی اوروفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق اور ان کی وزارت نے وزیراعظم کے اعلان کی لاج نہ رکھی۔

سکھرکے تاریخی لینس ڈاؤن برج کی مرمت سے انکار کردیا، یاد رہے کہ سکھر کے ایک سو چھبیس سال پرانے لینس ڈاؤن برج کو وزیراعظم نواز شریف نے قومی ورثہ قرار دیتے ہوئے اس کی مرمت کا حکم دیا تھا۔

pull-02

محکمہ ریلوے نے اٹھارہ سو نواسی میں تعمیر کیے جانے والے اس قومی ورثہ کی حفاظت کے بجائے حکومت کو خط لکھ کر یہ مؤقف دیا کہ لینس ڈاؤن برج ہمارے استعمال میں نہیں لہٰذا اس کی دیکھ بھال نہیں کی جائے گی۔

pull-01

ریلوے حکام نے سکھر کی ضلعی انتظامیہ اور محکمہ ورکس اینڈ سروسز سے دو ٹوک الفاظ میں کہہ دیا ہے کہ لینس ڈاؤن برج ہماری ذمہ داری نہیں اس کو خود سنبھالیں۔

یاد رہے کہ یہ اس وقت کا بغیر ستونوں اورمکمل طور پر لوہے سے تعمیر کیا جانے والا سب سے بڑا پل تھا، اس کی تعمیر میں 3300 ٹن لوہا استعمال کیا گیا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top