The news is by your side.

Advertisement

سکھر: دریائے سندھ کے قریب لاپتہ ہونے والے چھ بچے تاحال نہ مل سکے

سکھر : دریائے سندھ کے قریب لاپتہ ہونے والے چھ بچوں کو تلاش نہیں کیا جا سکا، بچوں کے کپڑے دریائے سندھ کے کنارے سے مل گئے، نہاتے ہوئے بچوں کے دریا میں ڈوبنے کا خدشہ ظاہر کیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق سکھر کے رہائشی چھ بچے جمعہ کی شام کرکٹ کھیلنے کے لیے گھر سے نکلے تھے، جن کا تاحال پتہ نہیں چل سکا، والدین اور اہل محلہ نے لاکھ ڈھونڈا لیکن سکھر کے چھ بچوں کا کچھ پتہ نہ چل سکا۔

کوئنز روڈ پر حماد پلازہ کے رہائشی چھے بچے جمعہ کی شام ہنستے کھیلتے گھر سے نکلے تھے، گیارہ سے سولہ سال کے بچے محلے میں کرکٹ کھیلنے کے بعد کھیل کا سامان قریبی دکان پر رکھ کر دور نکل گئے۔

لاپتہ بچوں کی عمریں گیارہ سے سولہ سال کے درمیان ہیں۔ پوری رات اور دن بھر کی مسسل تلاش کے باوجود بچے نہیں ملے،16سالہ محمد قاسم ،14 سالہ محمد انس،13سالہ احتشام اور گیارہ گیارہ سال کے احسان، عاصم اور حماد کی گمشدگی کی رپورٹ متعلقہ تھانے میں درج کرا دی گئی۔

مزید پڑھیں: دریائے سندھ میں کشتی الٹنے سے14افراد ڈوب گئے،چھ افراد کی لاشیں نکال لی گئیں

ایک محلے دار بچے کی نشاندہی پر دریائے سندھ کے کنارے زیرو پوائنٹ سے بچوں کے کپڑے اور جوتے مل گئے، پولیس کا کہنا ہے کہ سی سی ٹی وی فوٹیج میں بچے زیرو پوائنٹ کی طرف جاتے ہوئے دیکھے گئے، دوسری جانب ریسکیو ٹیموں کو پانی کے تیز بہاؤ کے سبب دریا میں سرچ آپریشن کے دوران مشکلات درپیش ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں