The news is by your side.

Advertisement

تحریک لبیک پر پابندی کی سمری تیار ‏

تحریک لبیک پر پابندی سے متعلق وزارت داخلہ کی سمری تیار کر لی گئی ہے۔

وفاقی حکومت کی جانب سے پُرتشدد واقعات اور احتجاج کی آڑ میں سرکاری و نجی املاک پر ‏حملوں کے بعد تحریک لبیک پر پابندی لگانے کا فیصلہ کیا ہے۔

پابندی عائد کیے جانے سے متعلق وزارت داخلہ نے سمری تیار کر لی ہے اور وزیراعظم نےبھی ‏سمری کے مسودے کی منظوری کیلئےگرین سگنل دے دیا ہے۔

ٹی ایل پی پر پابندی کیلئے سمری کی منظوری آئندہ24گھنٹےمیں لی جائے گی۔ کابینہ سرکلر سمری ‏کے ذریعےٹی ایل پی پرپابندی لگانےکی منظوری دے گی۔

اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید نے کہا کہ تحریک لبیک ‏پاکستان پر انسداد دہشتگردی ایکٹ کےتحت پابندی کا فیصلہ کیا ہے، ٹی ایل پی پر پابندی کی ‏سمری کابینہ کو بھجوارہےہیں، فیصلہ اینٹی ٹیررازم ایکٹ 1997(11)بی کےتحت کیاگیا ہے۔

وزیر داخلہ شیخ رشید نے ٹی ایل پی کے سوشل میڈیا چلانے والے لوگ کو مخاطب کرتے ہوئے کہا ‏کہ وہ سرینڈر کردیں، ان کی ایما پر تھانوں پر حملے ہوئے ، آپ نے ایمبولینسز کو روکا ہے , پولیس ‏اہلکاروں کو اغوا کے بعد تشدد کانشانہ بنایا، پرتشدد واقعات میں دو پولیس اہلکار شہید جبکہ تین ‏سو چالیس سے زائد زخمی ہوئے۔

وفاقی وزیر داخلہ نے پریس کانفرنس میں بتایا کہ پنجاب حکومت نے تنظیم پر پابندی کی سفارش ‏کی ہے، ٹی ایل پی کے سیاسی حالات پر نہیں بلکہ کردار کی وجہ سے پابندی لگارہےہیں، ٹی ایل ‏پی والوں کو کہتا ہوں کہ آپ حکومت کو مسائل سے دو چار نہیں کرسکتے۔

شیخ رشید نے کہا کہ ہم قومی اسمبلی میں باہمی اتفاق رائے سے مسودہ پیش کرنا چاہتےتھے، ‏حکومت کی ان سے باہمی اتفاق پر مسودے کی کوششیں ناکام ہوئیں، یہ ہر صورت میں فیض آباد ‏آناچاہتے تھے ان کی بڑی لمبی تیاری تھی، لمبی تیاری کاؤنٹر کرنے پر پولیس، قانون نافذ کرنے والے ‏اداروں کوخراج تحسین پیش کرتاہوں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں