The news is by your side.

Advertisement

ماہرینِ فلکیات نے سپرنووا کے پھٹنے کی تصویربنالی

کسی بھی ستارے کے بارے میں یہ معلوم کرنا انتہائی مشکل ہے کہ وہ کب پھٹ کر سپر نووا بن جائے گا – چنانچہ اسے خوش قسمتی ہی سمجھنا چاہیے کہ ماہرین ایک ستارے کے پھٹنے کے عمل کی مسلسل تصویریں بنانے میں کامیاب ہوگئے ہیں۔

یہ یوں ممکن ہوا کہ ماہرین ڈارک میٹر پر ریسرچ کے لیے آسمان کے ایک حصے کا سالوں سے مسلسل جائزہ لے رہے ہیں اور مختلف کہکشاؤں اور ستاروں کی وقفے وقفے سے تصویریں بنا رہے ہیں۔

جب ماہرین نے یہ دیکھا کہ ہم سے بیس ہزار نوری سال دور ایک سپر نووا پھٹا ہے تو انہوں نے یہ خوش گوار انکشاف کیا کہ یہ سپر نووا اس حصے میں پھٹا ہے جس کی وہ مسلسل تصویریں بنا رہے تھے۔

پہیے سے سفرشروع کرنے والا انسان ستاروں سے آگے نکل گیا*

چینی سائنسدانوں نے اصلی سے زیادہ طاقتور’نقلی‘ سورج تیارکرلیا*

یہ ستارہ ہم سے بیس ہزار نوری سال کے فاصلے پر واقع ہے اور اس پر طویل عرصے سے نظر رکھی جارہی تھی لہذا خلائی سائنسدان مئی 2009 میں ہونے والے اس دھماکے سے پہلے اور بعد پیدا ہونے والی تبدیلیوں کی عکس بندی میں کامیاب ہوگئے ہیں۔

star
سپرنوا پھٹنے سے پہلے اور بعد کے مناظر

سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ یہ سپر نووا اس لیے پھٹا کہ ہمارے سورج جتنے قطر کا ایک مردہ ستارہ ایک زندہ ستارے کے اس قدر قریب آگیا تھا کہ وہ اس کی گیس خود میں جذب کرنے لگا یہاں تک کہ دھماکہ ہوگیا۔

چنانچہ سائنس دانوں نے پرانی تصویروں کو ڈھونڈ نکالا اور ان کے تجزیے سے اس ستارے کی شناخت کر لی جو بالاخر سپر نووا بن کر پھٹ گیا- یہ تاریخ میں پہلی دفعہ ہے کہ سپر نووا کے پھٹنے سے پہلے اور بعد کی تصاویر دستیاب ہیں – امید ہے کہ اس ڈیٹا سے فزکس کے ماہرین کو اپنے نظریات کو پرکھنے میں مدد ملے گی۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں