شراب کی فروخت پر پابندی کا حکم معطل -
The news is by your side.

Advertisement

شراب کی فروخت پر پابندی کا حکم معطل

کراچی : سپریم کورٹ نے شراب کی فروخت پر پابندی کا حکم معطل کردیا، جسٹس ثاقب نے کہا یہ تاثر نہ لیا جائے عدالت نے شراب کی فروخت جائز قرار دے دی۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے سندھ میں شراب فروشی پر پابندی کیخلاف اپیلوں پر سماعت کی، درخواست گزار وائن شاپ کے وکیل شاہد حامد نے مؤقف اختیار کیا کہ سندھ ہائیکورٹ نے فریقین کا مؤقف نہیں سنا، کیس چار شراب خانوں کیخلاف تھا۔

درخواست میں کہا گیا کہ ہائیکورٹ نے ازخود نوٹس کا اختیار استعمال کرتے ہوئے 120 وائن شاپس اور 23 ہول سیلرز کو بند کرنے کا حکم جاری کر دیا۔

جسٹس ثاقب نثار نے ریمارکس دیئے کہ ہائیکورٹ کو سوموٹو کا اختیار نہیں، حضرت آدم کو جنت سے نکالنے سے پہلے مؤقف پیش کرنے کا موقع دیا گیا تھا، ہائیکورٹ نے تمام فریقین کا مؤقف سنے بغیر حکم جاری کیا۔

عدالت نے عدالت عالیہ کے فیصلے کیخلاف اپیلیں سماعت کیلئے منظور کرتے ہوئے معاملہ دوبارہ سندھ ہائیکورٹ کو بھجوا کر سندھ ہائیکورٹ کا شراب فروشی پر پابندی کا حکمنامہ کالعدم قرار دے دیا۔

جسٹس ثاقب نثار کا کہنا تھا کہ عدالت کے سامنے فریقین کی شنوائی سے متعلق قانونی نقطہ ہے، شراب جائز یا ناجائز یہ معاملہ عدالت کے سامنے نہیں، یہ تصور نہ کیا جائے کہ سپریم کورٹ نے شراب فروخت کی اجازت دے دی۔ قانونی نقطے پر کیس دوبارہ سندھ ہائیکورٹ کو بھجوا رہے ہیں، ہو سکے تو سندھ ہائیکورٹ روزانہ کی بنیاد پر کیس کی سماعت کرے۔

انکا مزید کہنا تھا کہ عدالت کا کام قانون کی تشریح کرنا ہے، قانون بنانا نہیں۔

سپریم کورٹ میں دائردرخواستیں اپیل میں تبدیل کردی گئیں، سماعت آئندہ ہفتے ہوگی، اس دوران ہائی کورٹ مقدمےکی دوبارہ سماعت کرے گی اور جن کا کاروبار متاثر ہوا ہے، ان کا بطور فریق مؤقف سن کر فیصلہ کرے گی۔


مزید پڑھیں : سندھ ہائی کورٹ کا شراب خانے بند کرنے کا حکم


یاد رہے کہ گزشتہ ماہ چیف جسٹس سندھ ہائیکورٹ سجادعلی شاہ نے شراب خانوں کے لائسنس منسوخ کرنے اور بند کرنے کا حکم دیا تھا۔

سماعت کے دوران بشپ کراچی، سکھ اور ہندو برادری کے مذہبی رہنماؤں نے عدالت میں بیان دیا کہ کوئی بھی مذہب شراب کی اجازت نہیں دیتا۔ ہمارے نام پر پرمٹ جاری کرکے بدنام کیا جا رہا ہے۔

جس پر چیف جسٹس سجاد علی شاہ نے ڈی جی ایکسائز اور آئی جی سندھ کو حکم دیا کہ جب کوئی مذہب شراب کی اجازت ہی نہیں دیتا تو سارے لائسنس آج ہی منسوخ کرکے رپورٹ دی جائے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں