The news is by your side.

Advertisement

سپریم کورٹ میں بنی گالہ تجاوزات کیس کی سماعت ایک ماہ کے لیے ملتوی

اسلام آباد: سپریم کورٹ میں بنی گالہ تجاوزات کیس کی سماعت کے دوران سی ڈی اے اور میٹروپولیٹن کارپوریشن کی رپورٹس جمع کرا دی گئیں۔

تفصیلات کے مطابق بنی گالہ تجاوزات کیس کی سماعت کے دوران سپریم کورٹ نے ریمارکس دیے کہ ایم سی آئی اپریل سے سی ڈی اے کو خط لکھ رہی ہے مگر کوئی جواب نہیں مل رہا، چیئرمین سی ڈی اے اورمیئر اسلام آباد کوپیش ہوکر جواب دینا چاہیے۔

وکیل سی ڈی اے نے جواب دیا کہ سیوریج اور واٹر ٹریٹمنٹ پلانٹس کے لیے جگہ منتخب کرلی ہیں، فضلے کی تلفی اور ڈمپنگ سائیٹس کے لیے بھی زمین کا انتخاب کرلیا ہے۔

جسٹس عمر عطا بندیال نے ریمارکس دیے کہ جگہوں کا انتخاب ہوگیا ہے تو ایم سی آئی کے حوالے کر دیں، زیر زمین سیوریج لائنوں کا کام بھی جلد مکمل ہونا چاہیے۔

عدالت عظمیٰ نے ریمارکس دیے کہ اسلام آباد میں غیر قانونی تعمیرات اور ماسٹر پلان کی خلاف ورزی زیادہ ہے، ماسٹر پلان پرنظرثانی ہو تو ممکن ہے کچھ غیرقانونی تعمیرات ریگولرائز ہوجائیں۔

سپریم کورٹ نے ریمارکس دیے کہ نالوں میں آلودگی روکنے پرسزا اور جرمانے کے علاوہ بھی کام کی ضرورت ہے، جسٹس عمر عطا بندیال نے ریمارکس دیے کہ لوگوں کو شعور دینے کے بھی اقدامات کیے جائیں۔

عدالت عظمیٰ نے سی ڈی اے، ایم سی آئی اور پنجاب حکومت سے پیش رفت رپورٹس طلب کرتے ہوئے بنی گالہ تجاوزات کیس کی سماعت ایک ماہ کے لیے ملتوی کردی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں