The news is by your side.

Advertisement

سپریم کورٹ کا بیرون ملک بینکوں میں پاکستانیوں کی رقوم پر از خود نوٹس

اسلام آباد: چیف جسٹس سپریم کورٹ نے بیرون ملک بینکوں میں پاکستانیوں کی رقوم پر از خود نوٹس لے لیا۔ عدالت نے فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر)، اسٹیٹ بینک، وزارت خزانہ اور ایس ای سی پی سے تفصیلی رپورٹ 2 ہفتے میں طلب کرلی۔

تفصیلات کے مطابق ملکی دولت بیرون ملک پارک کرنے والوں کے گرد گھیرا تنگ کردیا گیا۔ چیف جسٹس نے بیرون ملک بینکوں میں پاکستانیوں کی رقوم پر از خود نوٹس لے لیا۔

چیف جسٹس نے کہا کہ خبر ہے کہ کون لوگ ملک سے رقوم لوٹ کر بیرون ملک منتقل کر رہے ہیں۔ سوئس بینکوں سیمت کہاں کہاں اکاؤنٹس ہیں بتایا جائے۔

چیف جسٹس نے سوال کیا کہ لوٹی گئی دولت وطن واپس لانے کے لیے کیا اقدامات کیے گئے ہیں۔ وزارت خارجہ اور اسٹیٹ بینک مفاہمتی یادداشتیں اور معاہدے پیش کریں۔

انہوں نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ ایسی رقوم بادی النظر غیر قانونی طریقے سے کمائی جاتی ہیں۔ رقوم کو واپس لانا ہے۔ یہ قومی اثاثہ ہے۔ عدالت نے مزید کہا کہ پانامہ پیپرز پر کوئی پیشرفت نہیں ہوئی۔

چیف جسٹس نے چیئرمین ایف بی آر کو کہا کہ دبئی، برٹش ورجن آئی لینڈ، اسپین، سوئٹزر لینڈ اور یو کے سے تفصیلات لیں اور خود عدالت میں پیش کریں۔

انہوں نے ایف بی آر سمیت متعلقہ اداروں کو پاناما اور پیراڈائز پیپر پر مفصل رپورٹ پیش کرنے کی ہدایات بھی دیں۔ چیف جسٹس نے آئی ایس آئی، آئی بی اور ایم آئی بھی معلومات شیئر کریں۔ کیس کی سماعت 2 ہفتے بعد خصوصی بینچ کرے گا۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں