The news is by your side.

Advertisement

سپریم کورٹ نے کاغذاتِ نامزدگی سے متعلق لاہور ہائی کورٹ کا فیصلہ معطل کردیا

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے کاغذاتِ نامزدگی میں تبدیلی سے متعلق لاہور ہائی کورٹ کا فیصلہ معطل کردیا، الیکشن کمیشن کی درخواست بھی منظور کرلی۔

تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس آف پاکستان ثاقب نثار نے کاغذاتِ نامزدگی میں تبدیلی سے متعلق کیس کی سماعت کرتے ہوئے واضح کیا کہ انتخابات پچیس جولائی ہی کو ہوں گے۔

قبل ازیں سردار ایاز صادق اور الیکشن کمیشن نے لاہور ہائی کورٹ کے فیصلے کو سپریم کورٹ میں چیلنج کیا تھا، چیف جسٹس نے کہا کہ اگر انتخابات میں تاخیر ہوئی تو الیکشن کمیشن ذاتی طور پر ذمے دار ہوگا۔

سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد پاکستان میں انتخابات کے ملتوی ہونے کے سلسلے میں جن خدشات نے جنم لیا تھا اس نے دم توڑ دیا ہے، چیف جسٹس نے یقینی بنادیا کہ الیکشن 25 جولائی ہی کو ہوں گے۔

واضح رہے کہ سیاست دانوں کی جانب سے کاغذاتِ نامزدگی میں من پسند تبدیلیاں کیے جانے پر لاہورہائی کورٹ نے ان تبدیلیوں کو کالعدم قرار دے دیا تھا تاہم لاہور ہائی کورٹ کا فیصلہ ایک ایسے وقت میں آیا جب کاغذاتِ نامزدگی جمع کرائے جانے تھے جس سے الیکشن میں تاخیر کا خدشہ پیدا ہوا۔

الیکشن ملتوی کرانے کی کوشش ہوئی تو ایکشن لیا جائے گا، چیف جسٹس ثاقب نثار


کاغذاتِ نامزدگی میں ہونے والی تبدیلیوں میں دہری شہریت، پاسپورٹ کی تعداد کا سوال، ٹیکس ریکارڈ اور این ٹی این نمبر کا خانہ نکالا جانا شامل ہیں۔

خیال رہے کہ امیدوار کے مجرمانہ ریکارڈ کے خانے، تعلیم کتنی ہے، پیشہ کیا ہے، کس کس کی کفالت کے ذمے دار ہیں سب نکال دیا گیا، اثاثوں کی مالیت کا سوال بھی کاغذاتِ نامزدگی سے نکالا گیا ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں،مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں