The news is by your side.

Advertisement

اسلام آباد حادثہ: کشمالہ طارق کا بیٹا گاڑی چلا رہا تھا یا نہیں؟، زخمی نوجوان نے آنکھوں دیکھا حال بتادیا

اسلام آباد: جی الیون سگنل پر حادثےمیں بچ جانے والے مجیب الرحمان کا کہنا ہے کہ کشمالہ طارق کی سب باتیں جھوٹی ہیں ، میں نے اپنی آنکھوں سے دیکھا، گاڑی اذلان ہی چلارہاتھا۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد حادثےمیں بچ جانےوالے اور مدعی مقدمہ مجیب الرحمان نے ویڈیوبیان میں کہا ہے کہ پانچوں دوست ٹیسٹ دینےاسلام آباد جارہے تھے ، سری نگرہائی وے پر سگنل بند تھا، پراڈو گاڑی نے ہماری گاڑی کو ٹکر ماری اور میں گاڑی سے نیچے گرگیا دیکھا تو گاڑی کشمالہ طارق کا بیٹا اذلان چلارہا تھا۔

مجیب الرحمان کا کہنا تھا کہ کشمالہ طارق کی طرف سے جوباتیں کی جارہی ہیں سب جھوٹی ہیں ، گاڑی اذلان ہی چلارہاتھا میں نے اپنی آنکھوں سے دیکھا ، میرےساتھ موجودمیرے4دوست جاں بحق ہوگئے، انصاف ملنا چاہئے۔

گذشتہ رات سری نگر ہائی وے پر تیز رفتارگاڑی نے 6 افراد کوکچل دیا تھا، حادثے میں 4افرادجاں بحق اور 2زخمی ہوگئے جبکہ کارسوارفرار ہوگیا تھا ، عینی شاہدین نے بتایا کہ تیز رفتارگاڑی ایک نوجوان چلارہاتھا، گاڑی بیسٹ ویسٹرن کےمالک کی ہے اور بیسٹ ویسٹرن کےمالک کشمالہ طارق کے شوہر بتائے جاتے ہیں۔

ذرائع کے مطابق وفاقی محتسب کشمالہ طارق کابیٹااذلان خان بھی گاڑی میں موجودتھا تاہم حادثےکامعاملہ ہوٹل مالک کےڈرائیورپرڈالنےکی کوشش کی جا رہی ہے اور پولیس کو معلومات دی جارہی ہیں کہ گاڑی ڈرائیوروقاص چلارہاتھا۔

بعد ازاں تیز رفتارگاڑی کی ٹکر سے 4 افراد کی موت کا مقدمہ درج کرلیا گیا تھا ، ایف آئی آر میں کشمالہ طارق کے بیٹے اذلان کو بھی نامزد کیا گیا، جاں بحق نوجوان مانسہرہ سے اے این ایف کا ٹیسٹ دینے آئے تھے۔

بعد ازاں  وزیراعظم عمران خان نے جی الیون سگنل پر حادثے کا نوٹس لیتے ہوئے واقعےسے متعلق فوری رپورٹ طلب کر لی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں