The news is by your side.

Advertisement

سشانت سنگھ کی خودکشی، سلمان خان بڑی مشکل میں‌ پھنس گئے

ممبئی: بالی ووڈ اداکار سشانت سنگھ کی خودکشی کے بعد سلمان خان سمیت دیگر اہم شوبز شخصیات بڑی مشکل میں پھنس گئے۔

یاد رہے کہ بالی ووڈ کے ابھرتے ہوئے نوجوان اداکار سشانت سنگھ نے چودہ جون کو اپنے گھر میں پنکھے سے لٹک کر خودکشی کی تھی، اُن کی لاش کمرے سے برآمد ہوئی تھی۔

سشانت سنگھ کے چاہنے والوں نے اپنے ہیرو کی موت کا ذمہ دار بالی ووڈ کی اہم شخصیات کو قرار دیتے ہوئے خودکشی کی وجہ اقربا پروری کو قرار دیا تھا۔

بھارتی میڈیا رپورٹ کے مطابق بالی ووڈ انڈسٹری کی اہم شخصیات کے خلاف ریاست بہار میں مقدمہ درج کیا گیا۔

ہندوستان ٹائمز کی رپورٹ کے مطابق ایڈووکیٹ سدھیر کمار اوجھا نے بالی ووڈ کی 8 شخصیات بشمول کرن جوہر، سنجے لیلا بھنسالی، سلمان خان اور ایکتاکپور کے خلاف مقدمہ مظفر پور کی ایک عدالت میں دفع 306،109،504 اور 506 کے تحت دائر کیا۔

درخواست گزار نے نامزد ملزمان پر الزام عائد کیا کہ مذکورہ شخصیات نے مل کر سشانت کے خلاف سازش کی اور اُسے خودکشی پر مجبور کیا، یہ موت نہیں بلکہ قتل ہے۔

مزید پڑھیں: کیا سشانت سنگھ راجپوت کو قتل کیا گیا؟

درخواست گزار نے مؤقف اختیار کیا کہ ’ان شخصیات نے سشانت کو 7 فلموں میں کام کرنے سے روکا اور اُن کی کئی فلموں کو ریلیز نہیں ہونے دیا گیا کیونکہ  اُن پر کسی بڑے گھرانے یا اداکار کی چھاپ نہیں تھی، اقربا پروری کی وجہ سے ایسی صورت حال پیدا ہوئی جس کی وجہ سے سشانت انتہائی قدم لینے پر مجبور ہوا‘۔

پروڈیوسر ایکتا کپور نے ان الزامات پر ایک انسٹاگرام پوسٹ میں ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ وہ ایسے سازشی خیالات پر اپ سیٹ ہیں جن میں کوئی سچائی نہیں۔ انہوں نے لکھا کہ ‘اس مقدمے پر شکریہ کہ میں نے سشانت کو لانچ نہیں کیا، حالانکہ میں نے ہی اسے لانچ کیا تھا، میں اپ سیٹ ہوں کہ کس طرح ایسے خیالات پھیلائے جاسکتے ہیں، خدارا سشانت کے گھروالوں اور دوستوں کو سکون سے سوگ منانے دیں، سچ خود بہ خود سامنے آجائے گا‘۔

یہ بھی پڑھیں: سشانت سنگھ کی خودکشی کی ممکنہ وجوہات، دو گھنٹے پہلے کیا ہوا؟ چشم کشا انکشاف

قبل ازیں بھارتی ریاست مہارشٹرا کے  وزیر داخلہ انیل دیش مکھ نے کہا تھا کہ سشانت سنگھ کی موت کے حوالے سے ممبئی پولیس کی جانب سے ‘پیشہ وارانہ رقابت’ کے زاویے پر بھی تفتیش کی جائے گی۔

 

View this post on Instagram

 

Thanku for the case for not casting sushi….when Actually I LAUNCHED HIM. I’m beyond upset at how convoluted theories can b! [email protected] family n frns mourn in peace! Truth [email protected] CANNOT BELIEVE THIS!!!!! credit: @jagranenglishnews… A police case has been filed against eight people including Bollywood directors @karanjohar, Sanjay Leela Bhansali and @ektarkapoor along with actor @beingsalmankhan in connection with the death of actor Sushant Singh Rajput, news agency ANI reported on Wednesday . “In the complaint, I have alleged that Sushant Singh Rajput was removed from around seven films and some of his films were not released. Such a situation was created which forced him to take the extreme step,” Advocate Sudhir Kumar Ojha was quoted as saying . . . #sushantsinghrajput #sushantsinghrajputdeath #sushantsinghrajpurrip #jagranenglish #instawithjagranenglish #ripsushantsinghrajputsir💔🙏 #ripsushant #ripsushantsinghrajput🙏 #ripsushantsinghrajput💔 #ripsushantsinghrajput🙏🙏 #ripsushantsinghrajput #sushantnomore #salmankhan #salmankhanfans #salmankhanswag #salmankhanmerijaan #salmankhanfilms #salman #salmankhanfanclub #salmankhanfc #karanjohar #karanjoharfilm #karanjoharupdates #karanjoharfan

A post shared by Erk❤️rek (@ektarkapoor) on

انہوں نے اپنی ٹوئٹ میں کہا کہ اگرچہ پوسٹ مارٹم رپورٹ میں بتایا گیا کہ یہ خودکشی کا معاملہ ہے مگر ایسی میڈیا رپورٹس ہیں کہ اداکار مبینہ طور پر پیشہ وارانہ رقابت کے نتیجے میں شدید ڈپریشن کا شکار ہوئے تھے۔

یاد رہے کہ سُشانت سنگھ راجپوت نے 2013 میں فلمی کیریئر کا آغاز کیا تھا، انہوں نے ایک درجن فلموں میں ہی کام کیا تھا، انہیں 2014 میں ریلیز ہونے والی فلم پی کے سے شہرت ملی جس کے بعد انہوں نے مہندرا سنگھ دھونی کی زندگی پر بننے والی فلم میں مرکزی کردار ادا کر کے اپنی صلاحیتوں کا لوہا منوایا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں