site
stats
عالمی خبریں

سوئٹزرلینڈ میں عوامی مقامات پر مسلمان خواتین کے نقاب کرنے پر پابندی

جنیوا: سوئٹزر لینڈ میں بھی مسلمان خواتین کے نقاب کرنے پر پابندی عائد کر دی گئی ہے جس کی خلاف ورزی کی صورت میں بھاری جرمانہ بھی ادا کرنا پڑے گا۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق یورپ کے مختلف ممالک میں حالیہ دنوں میں ہونے والے حملوں کے پیش نظر سوئٹزرلینڈ کی ریاست ٹیکینو کی پارلیمنٹ نے ایک قانون منظور کیا ہے، جس کے تحت عوامی مقامات پر خواتین نقاب نہیں پہن سکیں گی جب کہ خلاف ورزی کی صورت میں ساڑھے 6 ہزار برطانوی پاؤنڈ جرمانہ ادا کرنا پڑے گا۔

ٹکینو حکومت نے برقع، نقاب اور مظاہرین کی جانب سے ماسک کے استعمال پر پابندی کی تجویز تھی مگر ارکان اسمبلی نے اسے صرف مسلمان خواتین کے نقاب تک محدود کردیا، غیرملکی سیاح بھی اس پابندی کی زد میں آئیں گے

ٹیکینو سوئٹزرلینڈ کے جنوب میں واقع اطالوی زبان بولنے والوں کی ریاست ہے، جہاں نئے قانون کے تحت عوامی مقامات، ریسٹورنٹس، بلڈنگز اور گاڑی کے اندر بھی یہ پابندی ہوگی۔

اس سے قبل فرانس میں بھی خواتین پر یہ پابندی عائد کی گئی تھی اور وہاں نقاب کرنے پر 150 یورو تک جرمانہ ہوسکتا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top